سابقہ کابینہ مستعفی ہو ،بلوچستان اسمبلی مچھلی منڈی بن گئی ، اپوزیشن کا سخت احتجاج ،اجلاس سے واک آؤٹ کر دیا

سابقہ کابینہ مستعفی ہو ،بلوچستان اسمبلی مچھلی منڈی بن گئی ، اپوزیشن کا سخت ...
سابقہ کابینہ مستعفی ہو ،بلوچستان اسمبلی مچھلی منڈی بن گئی ، اپوزیشن کا سخت احتجاج ،اجلاس سے واک آؤٹ کر دیا

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

کوئٹہ(مانیٹرنگ ڈیسک)بلوچستان اسمبلی کے اجلاس میں اپوزیشن ہفتہ کے روز بھی سراپا احتجاج رہی، ڈیسک بجائے، نعرے بازی کی اور سابقہ کابینہ کے مستعفی ہونے کا مطالبہ کرتے ہوئے اجلاس سے واک آؤٹ کر گئی۔

بلوچستان اسمبلی کا اجلاس اسپیکر راحیلہ حمید درانی کی صدارت میں شروع ہوا تو اپوزیشن کی جانب سے مشتاق رئیسانی کی میگا کرپشن کے سبب سابقہ کابینہ کے استعفی کا مطالبہ کرتے ہوئے احتجاج کیا گیا۔ اس موقع پر اپوزیشن ارکان نے ڈیسک بجا کر احتجاج کیا تو اسپیکر نے اپوزیشن کے مائیک بند کرنے کے احکامات جاری کئے جس پر اپوزیشن سیخ پا ہو گئی اور ایوان مچھلی بازار بن گیا۔ اپوزیشن اجلاس کا بائیکاٹ کرتے ہوئے احتجاجا ایوان سے باہر چلی گئی۔دوسری جانب اپوزیشن کے احتجاج پر سابق وزیر اعلی ڈاکٹر عبد المالک بلوچ بھی خاموش نہ رہے ، ان کا کہنا تھا کہ اپوزیشن الزامات کی بھرمار پر سیاست نہ کرے ، حقیقت پسندی کا مظاہرہ کرتے ہوئے صبر کا دامن تھامے رکھے، ہمارے پاس بھی بڑے بڑے پردہ نشینوں کے نام موجود ہیں۔سپیکر راحیلہ درانی نے بلوچستان اسمبلی کا اجلاس 17مئی تک کیلئے ملتوی کر دیا گیا۔

مزید : کوئٹہ