قائدتحریک اورایم کیوایم کے دیگر رہنماؤں کے خلاف مقدمہ ریاستی مظالم کی ایک اورمثال ہے : متحدہ قومی موومنٹ

قائدتحریک اورایم کیوایم کے دیگر رہنماؤں کے خلاف مقدمہ ریاستی مظالم کی ایک ...
قائدتحریک اورایم کیوایم کے دیگر رہنماؤں کے خلاف مقدمہ ریاستی مظالم کی ایک اورمثال ہے : متحدہ قومی موومنٹ

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

کراچی(مانیٹرنگ ڈیسک)متحدہ قومی موومنٹ کی رابطہ کمیٹی نے پولیس کی جانب سے ایم کیوایم کے قائد الطاف حسین اورایم کیوایم کے دیگررہنماؤں اورذمہ داروں کے خلاف ایک اورمقدمہ قائم کرنے کی شدیدمذمت کی ہے ۔

نجی ٹی وی کے مطابق رابطہ کمیٹی نے کہا ہے کہ 12مئی کوقائداعظم کے مزارکے سامنے ہونے والااجتماع ایم کیوایم کے شہید اور لاپتہ کارکنوں کے مسئلے کواجاگرکرنے اوران سے اظہاریکجہتی کیلئے منعقدکیاگیاتھا۔جس میں قائدتحریک الطاف حسین اورایم کیوایم کے دیگر رہنماؤں نے کارکنوں کے ماورائے عدالت قتل اورانہیں گرفتارکرکے لاپتہ کرنے کے واقعات اورمہاجروں کے ساتھ روارکھے جانے والے غیرمنصفانہ اور متعصبانہ سلوک پر اپنی تشویش اورعوام میں پائی جانے والی بے چینی کااظہارکرتے ہوئے ارباب اختیارسے ان مظالم کوبندکروانے کے مطالبات کئے تھے ۔  حکومت نے ان مطالبات اوراٹھائے جانے والے نکات پرہمدردانہ غورکرنے کے بجائے قائدتحریک اورایم کیوایم کے دیگر رہنماؤں اورذ مہ داروں کے خلاف ایک اورمقدمہ قائم کردیا ہے جوریاستی مظالم کی ایک اورمثال ہے

مزید : کراچی