طبعی موت یا انسانی غفلت ، خوشیاں بکھیرنے والی سوزی چل بسی ،ڈائریکٹر چڑیا گھر معطل

طبعی موت یا انسانی غفلت ، خوشیاں بکھیرنے والی سوزی چل بسی ،ڈائریکٹر چڑیا گھر ...

  

لاہور(لیڈی رپورٹر) ہتھنی (سوزی) ایک ہفتہ بیمار رہنے کے بعد چل بسی ،چڑیا گھر کے ڈائریکٹر شفقت علی کو محکمہ نے معطل کردیا، محکمہ کے سیکرٹری نے شفاف تحقیقات کے لئے نعیم بھٹی کی قیادت میں7 رکنی کمیٹی قائم کردی ۔تفصیلات کے مطابق لاہور چڑیا گھر کی ہتھنی سوزی بچوں اور بڑوں میں یکساں مقبول تھی اور ایک عرصے سے شہریوں کی تفریح کا خوبصورت سامان بنی ہوئی تھی۔معلوم ہوا ہے کہ سوزی ایک ہفتے تک بیمار رہی اور پھر اپنی عمر پوری کرنے کے بعد طبعی موت مر گئی لیکن پھر بھی محکمہ کے سیکرٹری نے پیڈا ایکٹ کے تحت لاہور چڑیا گھر کے سربراہ ڈائریکٹر شفقت علی کو ان کے عہدے سے ہٹا کر معطل کردیا تاکہ اس معاملے کی شفاف انکوائری کے لئے وہ اثر انداز نہ ہو سکیں۔تحقیقاتی کمیٹی اس بات کا تعین کرے گی کہ ہتھنی سوزی طبعی موت مری ہے یا اس میں انسانی غفلت شامل ہے ۔دوسری جانب چڑیا گھر میں سیر کے لئے آنیو الوں کو سوزی کی موت کی خبر کا سن کر بہت دکھ ہوا اور خصوصا چھوٹے بچے سوزی کو چڑیا گھر میں نہ پا کر آبدیدہ رہے اور ان کے ساتھ آنے والے بڑوں نے بھی سوزی کی موت پر گہرے دکھ اور افسوس کا اظہار کیا اور کہا کہ اس میں کوئی شک نہیں کہ بچوں کے پسندیدہ جانوروں میں سے سوزی بھی ایک اہم جانور کے طور پر جانی جاتی تھی جس کو اپنے ہاتھوں سے بچے نہ صرف کھانے پینے کی اشیاء کھلاتے تھے بلکہ اسے پیسے بھی دیا کرتے تھے اور ضد کرکے تصاویریں بھی بنوایا کرتے تھے۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -