حکومت ریاست کے ٹکڑے کرنا چاہتی ہے جس کی قطعا اجازت نہیں دی جائے گی

حکومت ریاست کے ٹکڑے کرنا چاہتی ہے جس کی قطعا اجازت نہیں دی جائے گی

  

سری نگر(کے پی آئی)صوبہ جموں کے حریت کانفرنس کے رہنماوں کی ایک میٹنگ ایاز احمد وانی کی صدارت میں منعقد ہوئی جس میں راجوری، پونچھ،سرنکوٹ،ڈوڈہ اور کشتواڑ سے تعلق رکھنے والے مندوبین نے شرکت کی۔یہاں جاری ایک پریس ریلیز میں کہا گیا ہے کہ میٹنگ میں مسئلہ کشمیر سمیت مختلف مسائل زیرِ غور لائے گئے اور موجودہ حالات پر تبادلہ خیالات عمل میں لایا گیا۔اس موقع پر ایاز احمد وانی نے مسئلہ کشمیر کے تئیں اپنائے گئے حکومتی رویہ کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا کہ وہ یہاں کی عوام کی امنگوں کے مطابق مسئلے کو حل کرنا نہیں چاہتی اور حریت پسندوں پر مظالم ڈھاکر انہیں خاموش کرنے کی ناکام کوشش میں مصروف ہے۔انہوں نے کشمیر میں عام لوگوں پر ڈھائے جا رہے ظلم وستم اور صوبہ جموں میں بڑھتی ہوئی فرقہ پرستی پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ حکومت ریاست کے ٹکڑے کرنا چاہتی ہے جس کی قطعا اجازت نہیں دی جائے گی۔

اس موقع پرجموں وکشمیرامن، عدل و انصاف پارٹی کے نام سے ایک نئی تنظیم کا وجود بھی عمل میں لایا گیا۔ متفقہ طور پر ایاز احمد وانی کو نئی قائم شدہ تنظیم کا چیئرمین منتخب کیا گیاجب کہ ہر ضلع کو تنظیم میں نمائندگی دی گئی۔اس نئی تنظیم کے قیام کا مقصد بیان کرتے ہوئے ایاز احمد وانی نے کہا کہ جموں وکشمیر امن، عدل و انصاف پارٹی ریاست میں امن کے قیام ،فرقہ وارانہ م آہنگی کو فروغ دینے اورمسئلہ کشمیر کے دیرپا اور قابلِ قبول حل کے لئے پر امن حل کے لئے پر امن جدوجہد کرے گی۔تمام شرکائے میٹنگ نے نئی تنظیم کے قیام کا خیر مقدم کرتے ہوئے اسے وقت کی ضرورت قرار دیا اور اس عزم کا اظہار کیا کہ وہ تنظیم کی بقااور اس کی مضبوطی کے لئے کام کریں گے۔

مزید :

عالمی منظر -