جرائم کے خاتمے کیلئے نئی فورسز خاطر خواہ کردار ادا نہ کر سکیں

جرائم کے خاتمے کیلئے نئی فورسز خاطر خواہ کردار ادا نہ کر سکیں

  

لاہور (شعیب بھٹی )لاہورمیں ڈولفن،کوئیک رسپانس فورس،محافظ اسکواڈ،اور ضلعی پولیس کے ہزاروں اہلکاروں کے باوجود شہر میں ہونے والے جرائم میں کمی نہ آسکی،جنوری سے لیکر چار مئی تک مختلف نوعیت کے اکتیس ہزار سے زائد مقدمات درج ہوئے،چار ماہ کے دوران قتل کی ایک سو چودہ جبکہ گا ڑیا ں ، موٹر سا ئیکل چوری اور چھینے جانے کی سولہ سو انتیس وارداتیں ہوئیں۔ تفصیلا ت کے مطا بق صو با ئی دا ر الحکومت میں قتل و غارت کا بازار گرم ہے جبکہ ڈ کیتی چور ی ، اغواء برا ئے تاوان ، گینگ ر یپ، وغیر جسے سنگین نو عیت کے مقد ما ت میں بھی دن بد ن اضا فہ ہوا ہے ۔ ذرا ئع کے مطابق سنگین اور معمو لی نو عیت کے مقد ما ت میں جنوری میں سات ہزار چار سو چھیانوے مقد ما ت در ج ہو ئے ۔فروری میں سا ت ہزار تین سو تینتالیس مقد ما ت در ج ہو ئے ہیں ۔مارچ میں سات ہزار چھ سو اڑتالیس، اپریل میں سات ہزار نو سو پینتالیس جبکہ مئی کے چار روز میں مختلف نوعیت کے آٹھ سو ستاون مقدمات درج ہوئے۔چار ماہ کے دوران قتل کے ایک سو چودہ مقدمات درج ہوئے،دہشتگردی کے تین ،اغوا برائے تاوان کے تین اور گینگ ریپ کا چا ر مقدمہ درج ہو ئے۔ڈکیتی کے پندرہ،اقدام قتل کے ایک سو ستر،اغواء کے دو سو ستانوے، گا ڑیا ں ، موٹرسائیکل چوری اور چھیننے کی وارداتوں کے سولہ سو انتیس مقدمات درج ہوئے۔

مزید :

علاقائی -