فاٹا میں ایف سی آر برائیوں کی جڑ ہے :سابق چیف جسٹس

فاٹا میں ایف سی آر برائیوں کی جڑ ہے :سابق چیف جسٹس

  

خیبر ایجنسی ( بیورورپورٹ)فاٹا میں ایف سی آر برائیوں کی جڑ ہے فاٹااصلاحات دھوکہ ہے موجودہ حکومت کے دور میں اس پر عمل درآمد کرنا نظرنہیں آرہا ہے سپریم کورٹ اور ہائی کورٹ کا دائرہ کار قبائیلی علاقوں تک بڑھایا جائے ۔ یہ بھی بڑی کامیابی ہوگی ۔پاکستان جسٹس ڈیموکریٹک پارٹی سربراہ سابق چیف جسٹس افتخار چوہدری خیبر ایجنسی کی تحصیل لنڈیکوتل کے دورے کے موقع پر ایک پروقار تقریب سدوخیل کے مقام پر منعقد ہوئی جس میں جسٹس ڈیموکریٹک پارٹی سے تعلق رکھنے والے عہدیداروں، ورکرز ،علاقے کے مشران کے علاوہ دیگر لوگوں نے کثیر تعداد میں شرکت کی،تقریب سے خطاب کر تے ہو ئے سابق جیف جسٹس افتخار چوہدری نے کہا کہ قبائل کی حیثیت ایک قلعے کی ہے جس نے پورے پاکستان کو تحفظ فراہم کیا لیکن افسوس کہ یہاں بنیادی ضروریات نہ ہو نے کے برابرہے فاٹا میں انڈ سٹری نہیں پا نی ہے نہ گیس اور نہ بجلی ۔ یہا ں کے لو گ بے روزگا ر ہے ان کے لئے روزگار کے مو قع دینے چاہیے انہوں نے کہا کہ ہماری پارٹی کا منشور میں تمام شہریوں کے لئے مساوات پر مبنی نظام ہے پا کستا ن کی آ ذادی میں ان کا اہم کردار ہے لیکن بد قسمتی سے ہزاروں قبا ئیلوں کی ابھی بھی شناختی کا رڈ بلاک ان قبائیلوں نے کشمیرمیں قربانیاں دی ہیں لیکن افسوس کہ اب بھی قبائیل پر کالا قانون نافذ ہے اور قبائیل انسانی حقوق سے محروم ہے انہوں نے کہا کہ لنڈیکوتل جیسے اہم اور حساس علاقے میں صحافیوں کے لئے سر کاری پریس کلب کا نہ ہو نا حیران کن اور افسوس ناک بھی ہے پاکستان جسٹس ڈیموکریٹک پارٹی کے مرکزی سیئنرنائب صدر شیخ یاسین نے کہا کہ اگر قبائیلی علاقوں تک سپریم کورٹ اور ہائی کورٹ کا دائرہ اختیار مذید تاخیر کی گئی تو جسٹس ڈیمو کریٹک پارٹی سپریم کورٹ میں پٹیشن دائرکر ینگے۔جسٹس ڈیموکریٹک پارٹی خیبر ایجنسی کے صدر دولت شا ہ آفریدی نے کہا کہ قبائیل کے لئے بنیادی انسانی حقوق فراہم کر نا اولین ترجیح ہے اور اگرہماری حکومت آئی تو احتساب کا عمل تیز کر یں گے اور پاکستانی عوام کے ہڑپ کئے ہو ئے پیسے واپس لائیں گے۔۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -