آئی پی ایل پچ فکسنگ سکینڈل، ’پچ فکسنگ ‘ میں گرفتار شدہ شخص انڈر 19 کرکٹر نکلا

آئی پی ایل پچ فکسنگ سکینڈل، ’پچ فکسنگ ‘ میں گرفتار شدہ شخص انڈر 19 کرکٹر نکلا
آئی پی ایل پچ فکسنگ سکینڈل، ’پچ فکسنگ ‘ میں گرفتار شدہ شخص انڈر 19 کرکٹر نکلا

  

کانپور (ویب ڈیسک) آئی پی ایل میں ’پچ فکسنگ ‘ کا بڑ ا منصوبہ حال ہی میں بے نقاب ہوا ہے، اس معاملے میں گرفتار شدہ ایک شخص انڈر 19 کرکٹر نکلا ، نایان شاہ نے گرین پارک کے ملازم کو پچ پر زیادہ پانی دینے کیلئے 5 ہزار روپے دیئے، بکیزو کٹوں کو من پسند شکل دے کر فائدہ اٹھانا چاہتے تھے۔

تفصیلات کے مطابق کانپور پولیس کی جانب سے تازہ ترین آئی پی ایل کرپشن کیس میں ہونے والی پکڑ دھکڑ کی مزید تفصیلات سامنے آئی ہیں، اس کے مطابق گزشتہ روز جن افراد کو گرفتار کیا گیا ان میں شامل نایان شاہ انڈر 19 کرکٹر اور مہار اشٹرا کی جانب سے کھیل چکے ہیں۔ اس نے پچ کے بارے میں معلومات کی فراہمی کیلئے بکیز سے ایڈوانس ڈیڑھ لاکھ روپے حاصل کیے تھے۔ نایان کے قبضے سے ممبئی پچ کی موبائل سے کھینچی گئی تصاویر بھی برآمد ہوئی ہیں، اس کی خدمات پورے آئی پی ایل کیلئے حاصل کی گئی تھیں۔

روزنامہ ایکسپریس کے مطابق کانپور میں نایان شاہ نے گرین پارک کے ملازم رمیش کمار کو ساتھ ملایا جس کے سلو فرائض میں پچ کو پانی دینا بھی شامل تھا ، نایان نے اسے 5 ہزار روپے دیئے تاکہ و ہ پچ کو زیادہ پانی دیتا جس سے وہ ہو جاتی، اس کے بعد وہ اس کی تصاویر نایان کو بھیجتا۔ وہ اس کام کیلئے مجموعی طور پر 20 ہزار روپے وصول کر بھی چکا تھا، رمیش بھی اس وقت حراست میں ہے۔ اس سارے گروہ کا منصوبہ بالکل سیدھا تھا ، وہ پہلے پچ کو ٹیمپر کرتے ، اس کی معلومات ملک بھر کے بکیز کو بھیجتے اور پھر ان سے رقم وصول کرتے۔

کانپور پولیس نے بی سی سی آئی کے اینٹی کرپشن یونٹ کی جانب سے موصول ہونیوالی اطلاعات پر اس گروہ کو بے نقاب کیا، نایان کے بارے میں شبہ ہے کہ اس کے کچھ پلیئرز کے ساتھ بھی رابطے تھے، وہ ہوٹل میں 17 ویں فلور پر کمرہ حاصل کرنے میں بھی کامیاب رہا جہاں گجرات لائنز کی ٹیم مقیم تھی، اس بارے میں ہوٹل مینجمنٹ کا کہنا ہے کہ چونکہ 15 ویں فلور پر اداکارہ امیشا پٹیل کو ٹھہرنا تھا اس لیے نایان کا کمرہ تبدیل کیا گیا۔ پولیس ہوٹل کی سی سی ٹی وی فوٹیج کا جائزہ لے کر مزید معلومات حاصل کرنے کی کوشش کر رہی ہے۔

مزید :

کھیل -