اتوار بازاروں میں گرانفروشی ، 6دکاندار گرفتار ، 3سٹال منسوخ

اتوار بازاروں میں گرانفروشی ، 6دکاندار گرفتار ، 3سٹال منسوخ

  

لاہور (اپنے نمائندے سے)چیئرمین پرائس کنٹرو ل کمیٹی میاں عثمان نے وحدت کالونی اتوار بازار کا دورہ کر کے اشیائے خوردونوش کی سرکاری ریٹ لسٹ کے مطابق فروخت اور معیار کا تفصیلی جائز ہ لیا ،گراں فروشی پر 6کے خلاف ایف آئی آر کا اندراج کرا کے موقع سے ہی گرفتار کر ادیا گیا جبکہ کم تولنے اور ناقص اشیاء کی فروخت پر تین سٹالز منسوخ کر دئیے گئے ۔ تفصیلات کے مطابق چیئرمین پرائس کنٹرول کمیٹی انتظامیہ کے افسران کے ہمراہ اچانک وحدت کالونی اتوار بازار پہنچ گئے اور تمام سٹالز کا دورہ کر کے سرکاری ریٹ لسٹ کے مطابق فروخت اور معیار کا جائزہ لیا ۔ اس موقع پر خریداری کیلئے آنے والے شہریوں سے بھی آگاہی حاصل کی گئی ۔ چیئرمین پرائس کنٹرول کمیٹی نے تمام سٹالز پر الیکٹرانک ترازو کے ذریعے تول چیک کی اور کم تولنے والے اور ناقص اشیاء کی فروخت پر تین سٹالز منسوخ کر دئیے گئے ۔میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے چیئرمین پرائس کنٹرول کمیٹی میاں عثمان نے کہا کہ ناجائز منافع خوری کرنے والے کسی رعایت کے مستحق نہیں اور ان کی جگہ سلاخوں کے پیچھے ہے ۔دریں اثناء ماڈل ٹاؤن اتوار بازار میں دکانداروں کی زائد قیمتیں اور اشیاء کا ناقص ،معیار ،صفائی ستھرائی اور سکیورٹی نہ ہونے کی وجہ سے شہری پریشان،جبکہ روزنامہ پاکستان کے سروے کے دوران بھڑاس نکالنے لگے ،تفصیلات کے مطابق روزنامہ پاکستان کی ٹیم اتوار بازار ماڈل ٹاؤن گلبرگ کا سروے کیا تو معلوم ہوا کہ اشیاء کا معیار انتہائی ناقص ہے اس حوالے سے صارفین میں سے محمد علیم چوہدری،محمد یوسف ملک ،عدیل برہان اور تصدق علی راجہ نے کہا ہم باہر کی دوکانوں سے بھی سودا سلف خریدتے ہیں لیکن جب اتوار بازاروں سے خریدتے ہیں تو ریٹ باہر کی مارکیٹ جیسا ہی ہے ، آلو30روپے، پیاز30روپے،ٹماٹر20روپے، لہسن دیسی80روپے ادرک180روپے، کھیرا20-30 روپے،سبز مرچ60روپے، لیموں 200روپے، بینگن 30 روپے، بھنڈی 80 روپے، کریلے،50روپے، گھیاکدو، 30روپے، پھول گوبھی50روپے، ٹینڈے 20روپے،شلجم30روپے،اروی50روپے،شملہ مرچ 30روپے، پھلو ں کی قیمتوں کو بھی آگ لگی ہوئی ہے سیب گاچہ،160روپے،کیلا،110سے120روپے تک، انگور100سے 110روپے تک فروخت ہورہے ہیں،شہریوں نے شکایات کی کہ یہی ریٹ تو عام مارکیٹ میں بھی چل رہے ہیں ہمیں گورنمنٹ کی طرف سے لگے ہوئے اتوار بازار میں آنے کا کیا فائدہ ہیں۔مزید شہریوں کا کہنا تھا کہ ریٹ دوکاندار اپنی مرضی کے لگا رہا ہے۔ دوسری طرف ناقص اشیاء کی فروخت بھی عروج پر ہے،ہم ادھر سے خریداری کرکے بالکل مطئمن نہیں ہیں ،یہاں صفائی کا انتظام انتہائی ناقص ہے،گوشت بھی کسی کا م کا نہیں ہے ،اشیاء کا معیار درجہ سوئم اور مہنگے داموں فروخت کی جارہی ہیں،فیصل علی چوہدری اور محمد زین منیر نے کہا کہ یہاں سب کچھ ویسا ہی جیسا کہ باہر ہے۔ دوسری جانب ٹی ایم او گلبر گ نے کہا ہے کہ گراں فروشی کی کسی کو اجازت نہ ہے ،شکایات کی صورت فوری کارروائی کرتے ہیں ۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -