ڈاکٹرز یونین پر فوری پابندی عائد کی جائے‘ انجمن تحفظ حقوق ملاکنڈ

ڈاکٹرز یونین پر فوری پابندی عائد کی جائے‘ انجمن تحفظ حقوق ملاکنڈ

  

بٹ خیلہ (محمدعثمان یوسفزئی سے )انجمن تحفظ حقوق مالاکنڈنے دھمکی دی ہے کہ اگرمالاکنڈانتظامیہ نے ہمارے کارکنوں کے خلاف مقدمہ درج کرکے غفلت کے مرتکب ڈاکٹروں کوگرفتارنہ کیاگیا توہم بھرپوراحتجاجی تحریک شروع کرکے کسی بھی قربانی سے دریغ نہیں کریں حکومت فوری طورپر ڈاکٹرزبرادری کے یونین پرپابندی عائد کی جائے اورمتاثرہ بچے کے لواحقین کے ساتھ انصاف کیاجائے گھروں میں بیٹھ کرمفت میں تنخواہیں وصول کرنیو الے ملازمین کوفوری طورپرڈیوٹی پرحاضرکیاجائے ۔ان خیالات کاا ظہار انجمن تحفظ حقوق مالاکنڈکے زیراہتمام کانفرنس سے مولاناجاوید ،اعجازعلی خان ،سکندرخان ،نائب ناظم پیرصفدرشاہ ،حاجی شادمحمد،شاہ بابا ،عدنان خان ،پیرعظمت شاہ ،مسلم خان ،مولاناعمران ہلالی ،حاجی شاکراللہ ،محمدزادہ بھٹووغیرہ نے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ ڈسٹرکٹ ہیڈکوارٹرہسپتال بٹ خیلہ میں ڈاکٹروں ماتحت عملہ نے اپناراج قائم کردیا ہے گزشتہ روز گاؤں خارکے جاں بحق ہونے والے بچے کی موت پرہم شدیدالفاظ میں مذمت کرتے ہیں اورمطالبہ کرتے ہیں کہ غفلت کے مرتکب ڈاکٹروں محمدسعید اورمحمدنوازکے خلاف مقدمہ درج کرکے گرفتارکرکے متاثرہ خاندان کوانصاف فراہم کیاجائے انہوں نے کہاکہ بٹ خیلہ ہسپتال کے ایم ایس ڈاکٹروحیدگل مذکورہ عہدے کے قابل نہیں ہے ہسپتال کے کلاس فورملازمین ڈاکٹرکے ڈیوٹی سرانجام دیتے ہیں اور75فیصدڈاکٹریہاں پرڈیوٹی کم اورپراپرٹی کاکاروبارزیادہ کرتے ہیں ہم مالاکنڈکے عوام کے کسی بھی صورت میں بے عزتی برداشت نہیں کریں گے کیونکہ یہاں پرڈاکٹرفرعون بن چکے ہیں ۔انہوں نے کہاکہ فی میل اورچلڈرن وارڈ سے فوری طورپرمیل عملہ کوتبدیل کرکے صرف اورصرف فی میل عملہ تعینات کیاجائے کیونکہ فی میل اورچلڈرن وارڈ میں میل عملہ کی تعیناتی یہاں کے پختون روایت کے کھلم کھلا خلاف ورزی ہے جوہم کسی بھی صورت میں برداشت نہیں کرسکتے ۔انہوں نے کہاکہ صوبائی حکومت نے ایک سازش کے تحت یہاں کے غیورپختون قوم کورسواء کر نے کیلئے پنجاب سے تعلق رکھنے والے ڈی سی اوراے سی تعینات کیاہے ہم ان زیادیتوں کوڈٹ کرمقابلہ کریں گے ۔انہوں نے کہاکہ ڈاکٹروں کی غفلت اورلاپرواہی کی وجہ سے بچوں اورجوانوں کی اموات روزکامعمول بن چکاہے ۔ انہوں نے کہاکہ اگرحکومت یہاں کے عوام کے ساتھ مخلص ہے توفوری طورپرمحکمہ صحت میں سرکاری یونین پرپابندی عائد کی جائے جب تک حکومت نے ہسپتال میں یونین ختم نہیں کی گئی تواس وقت تک ہسپتال کے حالات ٹھیک نہیں ہونگے ۔انہوں نے کہاکہ اگرمالاکنڈانتظامیہ ہمارے ساتھ تعاون نہیں کرسکتے توہم بھی ان کے ساتھ نہیں دیں گے اورہم بھی یہاں پرپولیس کے تعیناتی کاخیرمقدم کریں گے ۔انہوں نے کہاکہ بٹ خیلہ ہسپتال نے اب قحبہ خانے کاشکل اختیارکرلیاہے اورہسپتال میں تعینا ت ڈاکٹراب مسیحانہیں بلکہ ڈاکوبن چکے ہیں انہوں نے کہاکہ ہسپتال کے انتظامیہ مریضون سے قیمتی ادویات بھی چوری کرنے میں ملوث ہے ۔انہوں نے کہاہم انتظامیہ کی جانب سے ایف آئی اردرج کرنے خوف زدہ نہیں ہے وہ اپناشوق پوراکریں مگرڈاکٹروں کوبھی گرفتارکرکے حوالات میں بندکیاجائے تاکہ دودھ کادودھ پانی کاپانی ہوجائیگا۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -