امریکی طیارہ ڈپلومیٹک کارگو کے بہانے پاکستان آیا ، جوزف کا نام ’مزدوروں‘ کی فہرست میں تھا: رپورٹ

امریکی طیارہ ڈپلومیٹک کارگو کے بہانے پاکستان آیا ، جوزف کا نام ’مزدوروں‘ کی ...
امریکی طیارہ ڈپلومیٹک کارگو کے بہانے پاکستان آیا ، جوزف کا نام ’مزدوروں‘ کی فہرست میں تھا: رپورٹ

  

راولپنڈی (ویب ڈیسک) اسلام آباد میں موٹرسائیکل سوار کو گاڑی تلے کچلنے والے امریکی ملٹری اتاشی کرنل جوزف کو لے جانے کیلئے نور خان ائیربیس پر آنے والے سی ون تھرٹی طیارے کے بارے میں انکشاف ہوا ہے کہ اسے ڈپلومیٹک کارگو کے تحت بھیجا گیا اور یہ جواز پیش کیا گیا کہ سامان اتارنا اور چڑھایا جانا مقصود ہے۔

یوٹیوب چینل سبسکرائب کرنے کیلئے یہاں کلک کریں

روزنامہ ایکسپریس کے مطابق امریکی سفارتخانے کی جانب سے وزارت خارجہ کو جو تحریری درخواست ارسال کی گئی تھی اس کا واضح عنوان (To PAF Noor Khan Air Base Personnel Access Cargo Mission) تھا۔ اسی طرح سامان اتارنے اور چڑھانے کیلئے جس 17 رکنی سٹاف کی نشاندہی کی گئی تھی اس میں کرنل جوزف کا نام شامل تھا۔

طیارے تک رسائی کیلئے جو نام بھیجے گئے تھے ان میں بی جی بومین، میجر صنم قادری، ٹموتھی، ایوان فرائی، کیری ہارفمین، کرنل جوزف ہال، اوسوالٹ سیمنز، وائن کرافورڈ، فال نارائن، کرس اربن، چیرال ریس جبکہ ڈرائیورز میں مجیب عالم، احمد زاہد ندیم، طارق محمود، شاہ رحمان کے علاوہ نگرانی کرنیوالے فیصل یاسین اوروقار احمد شامل ہیں۔ اسی طرح لینڈ کروزر سمیت 5 گاڑیوں کی تفصیل بھی دی گئی تھی۔

مزید :

علاقائی -پنجاب -راولپنڈی -