بھارت نے نواز شریف کے بیان کی نقول امریکی کانگریس کو بھجوادیں

بھارت نے نواز شریف کے بیان کی نقول امریکی کانگریس کو بھجوادیں
بھارت نے نواز شریف کے بیان کی نقول امریکی کانگریس کو بھجوادیں

  

نیویارک (ویب ڈیسک) ممبئی حملوں کے حوالے سے نواز شریف کے بیان نے امریکہ میں بھارتی سفارتکاروں کو متحرک کر دیا۔اقوام متحدہ میں بھارت کے مستقل مندوب سید اکبر الدین نے مختلف ممالک کے سفارتکاروں کو نواز شریف کی طرف سے اپنے ہی ملک کیخلاف لگائے گئے الزامات کی کاپیاں فراہم کردی ہیں۔ بھارتی مندوب نے کہا نواز شریف نے بھارت کے موقف کی حمایت کی ، اس جرات مندانہ موقف پر نواز شریف کا شکر یہ ادا کرتے ہیں۔ واشنگٹن میں بھارتی سفیر نوٹیج سرنانے بھی سٹیٹ ڈیپارٹمنٹ سمیت کانگریس کے اراکین اور امریکی تھنک ٹینک اداروں کا نواز شریف کے اقرارنامہ کی نقول بھجوادی ہیں۔

روزنامہ 92نیوز کے مطابق پروفیسر اجے کمار شرما کا کہنا ہے نواز شریف نے اپنے ہی اداروں کے سینے میں خنجر گھونپا ہے۔ پروفیسر حامد خان نے کہا نواز شریف نے یہ بیان کسی طاقت کی ایماءپر دیا ہے جس سے ظاہرہوتا ہے کہ منظور پشتین اور نواز شریف ایک مخصوص ایجنڈے پر کام کررہے ہیں نواز شریف مجیب الرحمن ٹوبننے کے لیے سرگرم عمل ہیں۔

امریکہ میں پاکستانی کیمونٹی نے نواز شریف کے بیان کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا ہے ملک کے بااختیار اداروں کو اس کا سخت نوٹس لینا چاہیے کیونکہ اس بیان نے پاکستان پر سوالیہ نشان لگا دیا ہے ، گیم چینجر ٹاسک فورس امریکہ کے سربراہ عرفان سلیم بٹ کا کہنا ہے کہ نااہل نواز شریف کو فوراً گرفتار کیا جائے نیویارک کے ایک مسلم لیگی ٹیکسی ڈرائیور جمشید حسین نے کہا اب انکا تعلق ن لیگ سے نہیں کیونکہ نواز شریف پاکستان کا وفادار نہیں بلکہ مودی کا یار ہے۔

مزید :

بین الاقوامی -