سینئر صحافی، شہلا نرگس کا انتقال!

سینئر صحافی، شہلا نرگس کا انتقال!

سینئر صحافی اور مصنفہ شہلا نرگس بھی اڑسٹھ برس کی عمر میں انتقال کر گئیں، وہ طویل عرصہ سے بیمار تھیں اور ریڑھ کی ہڈی میں تکلیف کے باعث صاحب فراش تھیں، گلشن راوی میں نماز جنازہ کی ادائیگی کے بعد ان کو قبرستان میانی صاحب میں سپرد خاک کر دیا گیا۔ انہوں نے نوائے وقت، روزنامہ پاکستان، ماہنامہ قومی ڈائجسٹ، روزنامہ مشرق اور امروز میں بھی کام کیا۔ ان کے انٹرویوز یادگار تھے وہ کالم نگاری بھی کرتی تھیں۔ ”جنگ“ میں انہوں نے اہم ذمہ داری اور کردار نبھایا، پسماندگان میں ایک صاحبزادی اور دو صاحبزادے ہیں۔مرحومہ ایک قابل صحافی تھیں ان کی ایک کتاب جو چیمبر آف کامرس کے عہدیداروں اور اراکین کے انٹرویوز پر مشتمل تھی ”جیون ساتھی“ کے نام سے شائع ہوئی۔ ایک سو انٹرویز پر مشتمل یہ کتاب تجارتی اور صنعتی حلقوں میں بہت مقبول ہوئی۔ نماز جنازہ میں کثیر تعداد میں لوگ شریک ہوئے۔ صحافت اور ادب میں ان کی وفات ایک نقصان ہے۔ اللہ ان کے درجات بلند کرے۔

مزید : رائے /اداریہ