دنیا کی افسردہ ترین شہزادی جو نہ شادی کرسکتی ہے نہ ہی اپنے ملک پر حکمرانی کرسکتی ہے

دنیا کی افسردہ ترین شہزادی جو نہ شادی کرسکتی ہے نہ ہی اپنے ملک پر حکمرانی ...
دنیا کی افسردہ ترین شہزادی جو نہ شادی کرسکتی ہے نہ ہی اپنے ملک پر حکمرانی کرسکتی ہے

  

ٹوکیو(مانیٹرنگ ڈیسک) جاپان کے ولی عہد ناروہیتو اپنے باپ کی تخت سے دستبرداری کے بعد جاپان کے نئے شہنشاہ بن گئے ہیں۔ ان کے والد اکیہیتو نے بڑھاپے کے باعث تخت چھوڑا۔ بادشاہ ناروہیو کی ایک ہی بیٹی 18سالہ آئیکو ہے لیکن آپ کو یہ سن کر حیرت ہو گی کہ ان کی یہ بیٹی نہ تو شادی کر سکتی ہے اور نہ ہی اپنے ملک پر حکمرانی کر سکتی ہے۔ دی مرر کے مطابق جاپان کے شاہی خاندان کی روایت کے مطابق کوئی خاتون تخت کی وارث نہیں ہوسکتی۔ اس کے علاوہ اگر کوئی شہزادی شاہی خاندان سے باہر شادی کرتی ہے تو اسے شاہی اعزاز، اختیارات اور خاندانی دولت سے محروم کر دیا جاتا ہے اور اس کی حیثیت جاپان کے عام شہری کی ہو جاتی ہے۔

شہزادی آئیکو کو بھی اس کے والد شہنشاہ ناروہیتو نے شاہی خاندان سے باہر شادی کرنے سے منع کر رکھا ہے، لیکن مشکل یہ ہے کہ شاہی خاندان میں اس وقت کوئی ایسا مرد نہیں جس کے ساتھ نوعمر شہزادی آئیکو کی شادی ہو سکے۔ چنانچہ اب اگر اسے شاہی ٹائٹل اور اپنے باپ کی دولت وراثت میں لینی ہے تو اسے تمام عمر بغیر شادی کے تنہاءگزارنی پڑے گی۔رپورٹ کے مطابق حالیہ سالوں میں شہزادی آئیکو کی آنٹی شہزادی سیاکو سمیت چار شہزادیوں نے شاہی دولت ٹھکرا کر شاہی خاندان سے باہر محبت کی شادیاں کیں۔ شہزادی سیاکو کو عام شہری سے شادی سے قبل گاڑی چلانا سکھائی گئی اور سپرمارکیٹ لیجا کر شاپنگ کرنی سکھائی گئی تھی کیونکہ اس کے بعد اسے یہ تمام کام خود کرنے تھے اور ایک عام عورت کی زندگی گزارنی تھی۔

مزید : ڈیلی بائیٹس