کیا امریکا کورونا وائرس سے ہونیوالی ہلاکتوں کی اصل تعداد چھپا رہا ہے؟ٹاسک فورس کے سربراہ کے انکشاف پر ٹرمپ خود میدان میں آگئے

کیا امریکا کورونا وائرس سے ہونیوالی ہلاکتوں کی اصل تعداد چھپا رہا ہے؟ٹاسک ...
کیا امریکا کورونا وائرس سے ہونیوالی ہلاکتوں کی اصل تعداد چھپا رہا ہے؟ٹاسک فورس کے سربراہ کے انکشاف پر ٹرمپ خود میدان میں آگئے

  

واشنگٹن(ڈیلی پاکستان آن لائن)کیا امریکا کورونا وائرس سے ہونیوالی ہلاکتیں چھپا رہا ہے؟ امریکا میں کورونا وائرس ٹاسک فورس کےچیئرمین  ڈاکٹر انتھونی فاؤچی  نےامریکیوں کیلئے خطرے کی گھنٹے بجا دی ۔امریکی کورونا ٹاسک فورس کے سربراہ ڈاکٹر انتھونی فاؤچی نے چشم کشا انکشافات کرتےہوئے کہا ہے  کہ سرکاری سطح پر جتنی ہلاکتیں رپورٹ ہو رہی ہیں جانی نقصان اس سے کہیں زیادہ ہے۔ڈاکٹر فاؤچی نے لاک ڈاؤن میں نرمی کو امریکا کیلئے تباہ کن قرار دے دیا۔

 بی بی سی کے مطابق امریکی سینیٹ کمیٹی کے اعلیٰ سطح کے ایک اجلاس کے دوران ڈاکٹر انتھونی فاؤچی نے امریکی سینیٹ کمیٹی  کو بتایا۔سرکاری سطح پر جتنی ہلاکتیں رپورٹ ہو رہی ہیں۔ جانی نقصان اس سے کہیں زیادہ ہے ۔قرنطینہ کے دوران آن لائن اجلاس میں شریک ڈاکٹر فاؤچی نے لاک ڈاؤن میں نرمی کی مخالف کرتے ہوئے مؤقف اختیار کیا۔ایسا کوئی بھی اقدام امریکا اور امریکیوں کیلئے تباہ کن ہو گا۔

وائرس مزید پھیل جائے گا۔جسے کنٹرول کرنا انتہائی مشکل ہو جائے گا۔ڈاکٹر فاؤچی نے کہا۔اسکولوں کو اس نظریے سے کھولنا کہ بچے کورونا سے محفوظ ہیں انتہائی احمقانہ سوچ ہے۔

خیال رہے فاوچی کو کورونا کیخلاف ٹرمپ انتظامیہ کی ایک اہم شخصیت سمجھا جاتا ہے۔

دوسری جانب امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ڈاکتر فاوچی کے انکشافات پرحیرت کااظہارکیاہے، صدر ٹرمپ نے کہا ہے کہ وہ فاوچی کی باتیں ناقابل قبول ہیں، خصوصا سکولوں کے حوالے سے ان کی بات کی کوئی گنجائش نہیں ہے۔

واضح رہے امریکا میں اس وقت کورونا وائرس سے ہلاکتوں کی تعداد 84 ہزار سے تجاوز کرچکی ہے جبکہ ٘ملک بھرمیں چودہ لاکھ مریض ہیں۔

یاد رہے 

 کورونا وائرس کے انسداد کے لیے ڈاکٹر انتھونی فاوسی سمیت وائٹ ہاوس کی خصوصی ٹاسک فورس کے تین ارکان نے خود کو قرنطینہ کر لیا ہے۔ اس کی وجہ ان افراد کی ایک ایسے شخص سے ملاقات تھی، جس میں کووِڈ انیس کی تشخیص ہوئی۔ ڈاکٹر فاوسی متعدی بیماریوں کے قومی انسٹیٹیوٹ کے سربراہ ہیں۔ بتایا گیا ہے کہ ڈاکٹر فاوسی کا کوورنا ٹیسٹ مثبت نہیں ہے، تاہم انہیں روزانہ کی بنیاد پر چیک کیا جاتا رہے گا۔ بتایا گیا ہے کہ امریکی ادارے مراکز برائے انسدادِ امراض کے ڈائریکٹر ڈاکٹر رابرٹ ریڈ فیلڈ اور کمشنر برائے محکمہء خوراک و ادویات اسٹیفن ہان بھی ڈاکٹر فاوسی کی طرح اب گھر سے ہی کام کریں گے۔

 دوسری جانب موجودہ سپر پاور امریکا کی طرح روس میں بھی کورونا وائرس تباہی پھیلا رہا ہے ۔مسلسل 11ویں روز 10 ہزار سے زائد یومیہ کیسز نے حکام کی نیندیں اڑا دی ہیں۔ گزشتہ روز مزیدمزید 96 افراد ہلاک ہوئے ہیں جس سے مجموعی ہلاکتوں کی تعداد 2212، جبکہ متاثرین 2 لاکھ 42ہزار سے بڑھ چکے ہیں جو کہ امریکا کے بعد سب سے زیادہ ہیں۔

مزید :

بین الاقوامی -کورونا وائرس -