کورونا وبا ء کے باعث امریکی صدارتی انتخابات ملتوی ہو سکتے ہیں، ٹرمپ کے داماد و شمیر جیز ڈکشنر نے امکان ظاہر کر کے بیان بدل لیا

کورونا وبا ء کے باعث امریکی صدارتی انتخابات ملتوی ہو سکتے ہیں، ٹرمپ کے داماد ...

  

واشنگٹن(اظہر زمان، بیورو چیف) کورونا وائرس کے باعث امریکہ کے آئندہ صدارتی انتخابات کے ملتوی ہونے کے بارے میں سیاسی اور قانون ساز حلقوں میں قیاس آرائیاں جاری ہیں، ان اندازوں کو آگے بڑھاتے ہوئے صدر ٹرمپ کے داماد اور با خبر مشیر جیرڈ کشنر نے ٹائم میگزین کو انٹرویو دیتے ہوئے اشارہ دیا کہ کرونا وائرس کی وباء کے اثرات کی وجہ سے آئندہ صدارتی انتخابات کی تاریخ کو آگے بڑھایا جا سکتا ہے۔ یاد رہے کہ امریکہ کی دیرینہ روایات کے مطابق ہر چار سال بعد 3نومبر کو صدارتی انتخابات ہوتے ہیں جو امسال بھی اسی تاریخ کو طے ہوئے ہیں۔3نومبر کو ملک بھر کے تمام ریاستوں کے ووٹر ریاستی کوٹے کے مطابق کل 538مندوبین کا چناؤ کرتے ہیں اور جس صدارتی امیدوار کے 270حامی مندوب منتخب ہو جائیں وہ صدر منتخب ہو جاتا ہے۔ امریکہ کے بالواسطہ صدارتی انتخابات کا فیصلہ 3نومبر کو الیکٹورل کالج کے ارکان کے چناؤ سے ہی ہو جاتا ہے جو اگرچہ بعد میں اپنے حامی صدارتی امیدوار کو ووٹ ڈالنے کی صرف رسمی کارروائی کرتے ہیں۔ اس مرتبہ ڈیمو کریٹک پارٹی کا صدارتی ٹکٹ سابق نائب صدر جو بیڈن کو ملنے کا امکان ہے، جن کا ریپبلکن پارٹی کے امیدوار موجودہ صدر ڈونلڈ ٹرمپ سے مقابلہ ہونے کا امکان ہے،جو دوسری مرتبہ صدارتی انتخابات میں حصہ لے رہے ہیں۔ صدارتی انتخابات کے موجودہ سال میں ملک بھر میں کرونا وائرس کی وباء پھیلی ہوئی ہے جس کے باعث دونوں پارٹیوں کے صدارتی نامزدگی کے پرائمری اور بعد میں قومی کنونشن کے انعقاد متاثر ہو رہے ہیں۔ اس وجہ سے سیاسی اور قانون ساز حلقوں میں قیاس آرائی جاری ہے کہ کیا اس مرتبہ صدارتی انتخابات معمول کے مطابق 3نومبر کو ہو سکیں گے۔ انتخابات کو ملتوی کرنے کا اختیار صرف امریکی کانگریس کو حاصل ہے،اور افواہیں چل رہی ہیں کہ وائرٹ ہاؤس کی طرف سے ان انتخابات کو ملتوی کرنے کی درپردہ کوششیں جاری ہیں۔ جیرڈ کشنر صدر ٹرمپ کے داماد اور مشیر ہیں جو ان کے بہت قریب ہیں جنہوں نے انتخابات ملتوی ہونے کا اشارہ دیا لیکن بعد میں نکتہ چینی شروع ہونے کے بعد انہوں نے بیان گول کر دیا۔ مسٹر کشنر نے ٹائم میگزین کیساتھ انٹرویو میں انتخابات ملتوی ہونے کا واضح اشارہ دینے کے چند گھنٹے بعد اپنا بیان بدل لیا۔ انہوں نے اپنے سابق بیان کی وضا حت کرتے ہوئے کہا کہ ان کے علم میں ایسا کوئی منصوبہ نہیں کہ انتخابات ملتوی ہو جائیں گے۔ ویسے بھی صرف امریکی کانگریس ہی انتخابات کی تاریخ بدل سکتی ہے۔ سیاسی مبصرین مسٹر کشنر کے بیان سے حاصل اشارے کو بہت اہمیت دیتے ہیں۔ جو کہہ رہے ہیں کہ انتخابات ملتوی ہوتے ہیں یا نہیں لیکن یہ واضح ہے کہ وائٹ ہاؤس کی طرف سے اس سلسلے میں درپردہ کوششیں ضرور شروع ہو چکی ہیں۔

انتخابات ملتوی

مزید :

صفحہ اول -