گلیاڈ اور فیروز سنز لیباریٹریز پاکستان کے درمیان معاملات طے

      گلیاڈ اور فیروز سنز لیباریٹریز پاکستان کے درمیان معاملات طے

  

اسلام آباد(پ ر)گلیاڈ اور فیروز سنز لیباریٹریز کے درمیان معاملات طے پا گئے ہیں جن کے تحت فیروز سنزلیباریٹریز رضاکارانہ لائنسنگ ایگریمنٹ کے تحت ریمڈیسیور(Remdesivir)تیار کرے گی اور دنیا کے 127ممالک میں تقسیم کرے گی۔اس غیر مخصوص (non-exclusive) ایگریمنٹ کے تحت پاکستان اور بھارت میں قائم پانچ فارماسیوٹیکل کمپنیاں یہ دوا تیار کریں گی تاکہ اِس کی فراہمی کو مزید وسعت دی جا سکے۔اِن پانچ کمپنیوں میں فیروز سنز لیباریٹریز، سپلا لمٹیڈ (Cipla Ltd.)، ہیٹیرو لیبز لمٹیڈHetero Labs Ltd.))، جوبیلینٹ لائف سائنسز (Jubilant Lifesciences) اور مائلین(Mylan) شامل ہیں جو ریمڈیسیور کی تیاری کے علاوہ اسے دنیا کے 127ممالک میں تقسیم بھی کریں گی۔اِن ممالک میں زیادہ تر لوئرانکم اور لوئرسے مڈل انکم والے ممالک شامل جبکہ متعد دایسے اپر-مڈل اور ہائی انکم ممالک بھی شامل ہیں جنہیں ہیلتھ کیئر تک رسائی میں غیر ممالک رکاوٹوں کا سامنا ہے۔ان لائسنسنگ ایگریمنٹس کے تحت ان کمپنیوں کو ریمڈیسیور کے لیے گلیاڈ کے مینوفیکچرنگ پروسیس سے ٹیکنالوجی کی منتقلی کو وصول کرنے کا حق حاصل ہو گا تاکہ انہیں زیادہ تیزی سے پیداوار میں اضافے کے قابل بنایا جا سکے۔ لائسنس حاصل کرنے والی کمپنیاں اپنی تیار کردہ عمومی دوا کے لیے اپنے طور پر قیمت مقرر کرنے کا اختیار ہوگا۔

یہ لائسنس رائلٹی سے اس وقت تک مستثنی ٰہیں جب تک عالمی ادارہ صحت (World Health Organization) کووڈ-19 کے حوالے سے پبلک ہیلتھ ایمرجنسی آف انٹرنیشنل کنسرنPublic Health Emergency of International Concern)) کے خاتمے کا اعلان نہیں کر دیتا یا کووڈ-19سے بچاؤکے لیے ریمڈیسیور کے علاوہ کوئی دوسری دوا یا ویکسین کی منظوری نہیں دے دی جاتی ہے اور ان میں جو عمل بھی پہلے ہو جائے۔

مزید :

کامرس -