قادیانی مرتد ہیں انہیں اقلیت بھی نہیں کہا جاسکتا، طارق حسن

  قادیانی مرتد ہیں انہیں اقلیت بھی نہیں کہا جاسکتا، طارق حسن

  

کراچی (اسٹاف رپورٹر) پاکستان مسلم لیگ (ق) سندھ کے صدر محمد طارق حسن نے پاکستان مسلم لیگ (ق) کے حافظ عمار یاسر کی جانب سے پنجاب اسمبلی میں تحفظ ختم نبوت و ناموس رسالت صلی اللہ علیہ والہ وسلم پر قراداد پیش کرنے پر اور اسے کثرت رائے سے منظور کیئے جانے پر خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا کہ ہم ہمیشہ رسول کریم کی ناموس کے لیئے جانیں قربان کرنے کو تیار ہیں اور عقیدہ ختم نبوت کے تحفظ کے لیئے ہمیشہ سیسہ پلائی دیوار ثابت ہوں گے قادیانی مرتد ہیں انہیں اقلیت بھی نہیں کہا جاسکتا ان خیالات کا اظہار انہوں نے ہنگامی اجلاس سے خطاب میں کیا اس موقع پر مسلم لیگ (ق) سندھ کے قائم مقام جنرل سیکرٹیری کنور ارشد علی خان نے کہا کہ ختم نبوت ایمان کا حصہ ہے کسی دھمکیوں اور کیسوں سے نہیں ڈرتے بلکہ ان سے نبردآزما ہونے کی صلاحیت رکھتے ہیں مسلم لیگ سندھ کے سیکرٹیری اطلاعات محمد صادق شیخ اور فیصل علی بلوچ نے کہا کہ ختم نبوت و ناموس رسالت صلی اللہ علیہ والہ وسلم کیلئے اپنی جانیں نچھاور کردیں گے اجلاس میں نعمت خلجی، شاہد عباسی،خالد میر، انور شاہ کشمیری،محمد زبیر ہاشمی ایڈووکیٹ، نواب ھما میر ٹالپر، خرم شاہد میؤ ایڈووکیٹ، سلیم قادری، اقبال دہلوی اور دیگر موجود تھے اجلاس میں دیگر صوبائی اسمبلیوں کے اراکین سے بھی اس حوالے سے قرادادیں منظور کرانے کی اپیل کی اجلاس میں اس امر پر افسوس کا اظہار کیا گیا کہ سندھ حکومت بھی اب ایسے اقدامات کرے جس سے مذہبی منافرت نہ پھیلے صوبے میں سب کو برابر حقوق ملنے چاہیں ایک طرف مساجد پر پابندی پولیس اہلکار جوتے پہن کر مساجد میں گھس آتے ہیں پھر علماء کی مشاورتی اجلاسوں کے بعد مشروط طور پر نماز باجماعت، جمعہ مبارک اور تراویح کی اجازت دی جاتی ہے اور دوسری جانب اچانک مذہبی اجتماعات اور جلسے، جلوسوں کی اجازت دینا سمجھ سے بالا تر ہے ہم کسی مکاتب فکر کے خلاف قطعاً نہیں ہم سب کا بے حد احترام کرتے ہیں لیکن صوبے میں دو قانون نہیں چل سکیں گے اور ایسا لگ رہا ہے کہ حکومت سندھ مذہبی منافرت کو ہوا دے رہے ہیں اسے روکیں سب کو ایک ساتھ لے کر چلیں یہ حکومت کی ذمہ داری ہے

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -