40لاکھ طلبہ،11ہزار ایجوکیٹرز کا مستقبل ضائع نہیں ہونے دیں گے،غلام محی الدین

40لاکھ طلبہ،11ہزار ایجوکیٹرز کا مستقبل ضائع نہیں ہونے دیں گے،غلام محی الدین

  

لاہور(لیڈی رپورٹر)پنجاب ٹیچرز یونین پنجاب کے مرکزی صدرحافظ غلام محی الدین، سیکرٹری جنرل مرکزیہ کاشف شہزاد چودھری، ضلع لاہور کے صدر اعجاز حسین، راناافتخارعلی خان، محمد ثاقب قریشی، محمدارشد بدر عثمان نیازمدنی، نصرت شاہین، طاہر محمود مغل،صائمہ نعیم،رضیہ سلطانہ رانا،کبرا علی اصغرزاہد خان میو،زمرد خانم، قاضی منیر احمد،ضیاالحق، رانامحمد اصغرو دیگر نے کہا ہے کہ حکمرانوں کو 40 لاکھ طلباء اور 11ہزار سیکنڈری سکول ایجوکیٹرز کا مستقبل ضائع نہیں کرنے دیں گے۔ امتحانات نہ لینے کا فیصلہ واپس نہ لیا گیا اور سیکنڈری سکول ایجوکیٹرز کو غیر مشروط مستقل نہ کیا گیا توعید کے بعد اساتذہ، والدین اور طلباء بھرپور احتجاج کریں گے۔

اور عدالتی راستہ بھی اختیار کیا جائے گا۔ دہم کلاس کا مکمل امتحان ہو چکا ہے تمام مضامین کی فوری مارکنگ کا انتظام کیا جائے۔

سیکریسی کے تحت تمام مضامین کے پرچے ایگزامینرز اور ہیڈایگزامینرز کوگھروں میں بھیج کر بھی آسانی سے چیک کروائے جا سکتے ہیں۔ اسی طرح نہم کلاس کے بھی چند پرچے باقی ہیں۔ ترقی یافتہ ممالک کی پہلی ترجیح اپنے اساتذہ اور طلباء ہیں لیکن بدقسمتی سے ہمارے حکمرانوں کے لئے اساتذہ اور طلباء کی کوئی اہمیت نہیں۔ امتحانات کی منسوخی کا فیصلہ بند کمرے میں بیٹھ کر کیا گیا جس سے لاکھوں طلباء کا مستقبل داؤ پر لگا دیا گیا۔فیصلہ کرنے سے پہلے اساتذہ تنظیموں، اساتذہ، والدین اور طلباء کسی سے مشورہ نہیں کیا گیا۔ لگتا ہے کہ ہمارے وفاقی اور صوبائی وزیر تعلیم شاید اپنے فیصلوں کو حرف آخر سمجھتے ہیں اس لئے کسی سے مشورہ کرنا پسند نہیں کرتے۔ امتحانات تو پہلے ہی قوائدوضوابط کے مطابق ہوتے ہیں۔ اس وقت تمام سکول و کالج بند ہیں بہت بڑی تعداد میں امتحانی ہال، کمرے اور امتحانی عملہ دستیاب ہے۔ سماجی فاصلے کو مدنظر رکھتے ہو کلاس نہم، دہم،گیارویں اوربارویں کے امتحانات لینا کوئی مشکل کام نہیں ہے۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -