چین کے بعد ایشیا کا ایک اور ملک کوروناسے پاک

چین کے بعد ایشیا کا ایک اور ملک کوروناسے پاک
چین کے بعد ایشیا کا ایک اور ملک کوروناسے پاک

  

بنکاک(ڈیلی پاکستان آن لائن) چین کے بعد ایک اور ملک بھی کورونا وائرس پر قابو پانے والوں میں شامل ہوگیاہے۔تھائی لینڈ کورونا پرقابو پانے والا دوسرا ملک بن گیا ہے جہاں 9مارچ کے بعد کورونا کا کوئی نیا کیس سامنے نہیں آیا۔

تفصیلات کے مطابق کورونا وائرس کا خوف آہستہ آہستہ کم ہونا شروع ہوگیا۔جہاں یورپ کے متعدد ممالک نےلاک ڈاؤن میں نرمی کردی ہے وہیں۔ایشیا پیسیفک کے ممالک میں کورونا کے کیسز رپورٹ ہونا بند ہوگے ہیں۔

چین کے بعدتھائی لینڈ میں آج کورونا کا کوئی نیا کیس رپورٹ نہیں ہوا۔تھائی لینڈ میں کورونا متاثرین کی مجموعی تعداد 3017 اور 56 ہلاکتیں رپورٹ ہوئی ہیں۔حکومت کا کہنا ہے کہ کورونا کا کیس رپورٹ نہ ہونے کا مطلب یہ نہیں کہ حالات قابو میں ہیں بلکہ کورونا کی دوسری لہر اس سے بھی تباہ کن ہو سکتی ہے۔

کورونا وائرس کی وجہ سے تھائی لینڈ کی آبادی معاشی بحران سے گزر رہی ہے۔۔اس صورت حال میں بنکاک کے شیفز نےضرورت مند خاندانوں کی مدد کرنے کا بیڑا اٹھالیا ہے۔دو سو کے قریب ماہر پکوان اور درجنوں ڈرائیورز نے نہایت کم رقم کے عوض اس مشن کو سرانجام دینا شروع کردیا ۔

ماہر شیف کا کہنا تھا کہ ان دنوں انہیں کوئی روزگار میسر نہیں ہے،لیکن وہ ان لوگوں کو فراموش نہیں کر سکتے جو زیادہ ضرورت مند ہیں۔روزانہ چار ہزار کے قریب کھانے کے باکسز تیار کیے جاتے ہیں۔شیف دن کے صرف 12 ڈالرز جبکہ کھانا پہنچانے والے ڈرائیور 9 ڈالرز تک کی رقم کماتے ہیں۔۔

چائنہ کے بعد تھائی لینڈ وہ پہلا ملک تھا جس میں کورونا وائرس نے اپنے مضبوط پنجے گاڑے تھے۔تاہم حالات پر قابو پا لیا گیا ہے۔اس دو ماہ کے عرصے میں کورونا وائرس کا کوئی نیا مریض سامنے نہیں آیا۔حکومت کی جانب سے کاروباری پابندیاں ختم کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے ۔دو دن بعد شاپنگ مالز بھی کھول دیے جائیں گے۔

مزید :

بین الاقوامی -کورونا وائرس -