کابل کے ہسپتال میں حملہ، چار گھنٹے کا امید بھی جانبر نہ ہوسکا، اس کا یہ نام کیوں رکھا گیا تھا؟ والدہ کا ایسا انکشاف کہ آپ کی آنکھیں بھی نم ہوجائیں

کابل کے ہسپتال میں حملہ، چار گھنٹے کا امید بھی جانبر نہ ہوسکا، اس کا یہ نام ...
کابل کے ہسپتال میں حملہ، چار گھنٹے کا امید بھی جانبر نہ ہوسکا، اس کا یہ نام کیوں رکھا گیا تھا؟ والدہ کا ایسا انکشاف کہ آپ کی آنکھیں بھی نم ہوجائیں

  

کابل (ویب ڈیسک) کابل کے میٹرنٹی ہسپتال پر دہشت گرد حملے میں ایک ایسا بچہ بھی جاں بحق ہو ا جو سات سال کی دعائوں کے بعد ماں کی گود میں آیا تھا۔ 27سالہ زینب نے بتایا کہ اس نے اپنے بچے کے لیے سات سال دعائیں کیں، منگل کی صبح وہ پیدا ہوا تو اس کا نام امید رکھا۔

زینب نے بتایا کہ بچے کی پیدائش کے بعد وہ اپنے آبائی علاقے بامیان جانے کی تیاری کر رہے تھے کہ تین افراد پولیس اہل کاروں کے بھیس میں میٹرنٹی وارڈ میں داخل ہوئے اور اندھا دھند فائرنگ شروع کر دی۔جاں بحق ہونے والے بچے کی ماں نے بتایا کہ فائرنگ سے بچہ جاں بحق ہو گیا جسے دنیا میں آئے صرف چار گھنٹے ہوئے تھے۔کابل میں جس میٹرنٹی ہسپتال پر حملہ کیا گیا اسے ڈاکٹروں کی رفاہی تنظیم ڈاکٹرز ودآو¿ٹ بارڈرز چلاتی ہے۔

مزید :

بین الاقوامی -