کورونا وائرس کو قابو کرنے میں کتنے سال لگ سکتے ہیں؟ عالمی ادارہ صحت کی چیف سائنسدان نے انتہائی خطرناک کن پیشنگوئی کردی

کورونا وائرس کو قابو کرنے میں کتنے سال لگ سکتے ہیں؟ عالمی ادارہ صحت کی چیف ...
کورونا وائرس کو قابو کرنے میں کتنے سال لگ سکتے ہیں؟ عالمی ادارہ صحت کی چیف سائنسدان نے انتہائی خطرناک کن پیشنگوئی کردی

  

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) دنیا کے ہر شخص کے ذہن میں ان دنوں ایک سوال کلبلا رہا ہے کہ کورونا وائرس نامی اس بلا سے کب نجات ملے گی اور زندگی پہلے کی طرح معمول پر آئے گی۔ اب عالمی ادارہ صحت کی ’چیف سائنسدان‘ سومیا سوامی ناتھن نے اس سوال کا ایسا جواب دے دیا ہے کہ سن کر لوگوں کی پریشانی اور بڑھ گئی۔ میل آن لائن کے مطابق سومیا سوامی ناتھن نے کہا ہے کہ کورونا وائرس پر قابو پانے میں چار سے پانچ سال لگ سکتے ہیں۔انہوں نے یہ بات گلوبل بورڈ روم ڈیجیٹل کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔ ان کا کہنا تھا کہ ”کورونا وائرس کی وباءکے خاتمے کا بہترین اور حتمی راستہ مو¿ثر ویکسین ہے لیکن اس کی تیاری میں کئی شکوک و شبہات ہیں، ویکسین کا مو¿ثر اور محفوظ ہونا، اس کی پروڈکشن، ڈسٹری بیوشن وغیرہ۔ یہ ایک طویل مرحلہ ہے جس میں چار سے پانچ سال لگ سکتے ہیں۔

دوسری طرف عالمی ادارہ صحت کے ہیلتھ ایمرجنسیز پروگرام کے سربراہ ڈاکٹر مائیک ریان کا کہنا ہے کہ ”چونکہ اس وباءکے خاتمے کا دارومدار وائرس کا پھیلاﺅ روکنے کے اقدامات اور مو¿ثر ویکسین کی تیاری پر ہے لہٰذا امید کی جا سکتی ہے کہ اس کا خاتمہ جلد ہو جائے تاہم اس حوالے سے حتمی طور پر کچھ نہیں کہا جا سکتا۔“ڈاکٹر مائیک نے اپنی گفتگو میں لاک ڈاﺅن میں نرمی یا اس کا خاتمہ کرنے والے ممالک کے لیے وارننگ جاری کرتے ہوئے کہا کہ ”ممالک کو مناسب نگرانی کے اقدامات کے بغیر لاک ڈاﺅن میں نرمی لانا خطرناک ثابت ہو سکتا ہے۔ یہ ایک نیا وائرس ہے جو پہلی بار انسانوں کو لاحق ہوا ہے چنانچہ یہ پیش گوئی کرنا بہت مشکل ہے کہ ہم کب تک اس وائرس پر غالب آئیں گے۔“

مزید :

بین الاقوامی -