بھارتی وزیرخارجہ کا آزاد کشمیر پر حملے کا بیان سنجیدہ لیا جائے، بیرسٹر سلطان محمود 

بھارتی وزیرخارجہ کا آزاد کشمیر پر حملے کا بیان سنجیدہ لیا جائے، بیرسٹر ...

  

مظفرآباد(این این آئی)صدر آزاد جموں و کشمیر بیرسٹر سلطان محمود چوہدری نے کہا ہے کہ بھارتی وزیر دفاع راج ناتھ سنگھ نے آزاد کشمیر پر برملہ حملے کا اظہار کیا ہے لہذا اسے سنجیدگی سے لینا چاہیے کیونکہ بھارت پہلے بھی 26 فروری2019 کو بالاکوٹ پر جارحیت کر چکا ہے۔ بھارت نے 5اگست 2019 کو مقبوضہ کشمیر کی آئینی حیثیت تبدیل کرنے کے اقدام کے بعد اس نے مقبوضہ کشمیر میں تیزی سے غیر قانونی اور غیر آئینی اقداما ت اٹھانے شروع کر دیئے ہیں جس کے تحت 42لاکھ غیر ریاستی ہندؤں کو جعلی ڈومیسائل جاری کیے گئے۔ اسی طرح چار ہزار بھارتی سرمایہ کاروں کو سرمایہ کاری کی آڑ میں مقبوضہ کشمیر میں زمین الاٹ کی جا رہی ہے اور اب بھارت نے مقبوضہ کشمیر میں ڈی لیمٹیشن کا عمل بھی شروع کر دیا ہے جس کے تحت مقبوضہ کشمیر میں نئی حلقہ بندیاں تشکیل دی جا رہی ہے جس کے تحت وہ مقبوضہ کشمیر میں ایک ہندؤ وزیراعلیٰ کو لانے کی راہ ہموار کر رہے ہیں۔ لہذا عالمی برادی کو اس کا نوٹس لینا چاہیے اور بھار ت کو مقبوضہ کشمیر میں جاری غیر قانونی اور غیر آئینی مقدامات سے روکنا چاہیے۔ ان خیالات کا انہوں نے جمعہ کو مظفرآباد میں امبور کے مقام پر پی ٹی آئی آزاد کشمیر کے مرکزی رہنماء سید وارث علی گیلانی کی جانب سے اپنے اعزاز میں دی گئی عید ملن پارٹی کے موقع پر صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔  صدر ریاست بیرسٹر سلطان محمود چوہدری نے مزید کہا کہ بھارت وزیر خارجہ راج ناتھ سنگھ کا آزاد کشمیر پرحملے کا بیان سنجیدگی سے لیا جانا چاہیے کیوں کہ بھارت عالمی سطح پر تنہا ہو چکا ہے اور وہ بوکھلاہٹ میں ایسے بیانات دے رہے ہیں، لہذا انٹر نیشنل کمیونٹی بھارت کو اس کے مکروح عزائم سے باز رکھے۔ 

سلطان محمود

مزید :

صفحہ آخر -