”کباڑ خانہ،حسینوں کے خطوط“ آرٹس کونسل میں تعارفی تقریب

 ”کباڑ خانہ،حسینوں کے خطوط“ آرٹس کونسل میں تعارفی تقریب

  

ملتان(اے پی پی)معروف انشائیہ نگار، جائزہ نگار،نقاد اورمحقق محمد اسلام تبسم کی پہلی کتاب 44سال بعد منظرعام پرآگئی۔اسلام تبسم سینئر قلمکار ہیں لیکن وہ اب تک اپنا تخلیقی کام منظرعام پرنہیں لاسکے تھے۔ان کی کتاب کباڑ خانہ اورحسینوں کے خطوط کی تعارفی تقریب(بقیہ نمبر37صفحہ7پر)

 ملتان آرٹس کونسل کی ادبی بیٹھک میں سخن ورفورم کے زیراہتمام منعقد ہوئی۔تقریب کی صدارت نامور ماہرتعلیم اور نقاد ڈاکٹر حمیدر ضاصدیقی نے کی،مہمان خصو صی پروفیسر ڈاکٹر محمد امین تھے۔اس موقع پر مستحسن خیال خلجی، رضی الدین رضی، شاکر حسین شاکر، زاہد حسین گردیزی،وسیم ممتاز،قیصر عباس صابر،اظہر سلیم مجوکہ اوردیگرقلمکاروں نے اظہارخیال کیا۔ مقررین کا کہنا تھا کہ محمد اسلام تبسم نے انشائیہ نگاری میں ملکی سطح پر اپنی شناخت بنائی، ڈاکٹر وزیر آغا اور ڈاکٹر انور سدید،ڈاکٹرسلیم اخترسمیت نامور نقاد ان کے منفرد اسلوب کے معترف رہے،وہ ملک بھرمیں ملتان اوراردوانشائیہ کے حوالے سے منفرد شناخت رکھتے ہیں ان کاتخلیقی کام منظرعام پرآناضروری تھا۔اس موقع پرگردوپیش پبلیکشنز کی جانب سے اعلان کیاگیاکہ یہ ادارہ آنے والے دنوں میں ایسے اورقلمکاروں کی بھی تخلیقات منظرعام پرلائے گاجوکتاب شائع کرانے کی استطاعت نہیں رکھتے۔ اس ضمن میں وسیم ممتاز،شاکرحسین شاکراورقمررضاشہزاد پرمشتمل کمیٹی قائم کردی گئی ہے جن کی منظوری سے مستحق ادیبوں کی یہ کتب شائع کی جائیں گی۔تقریب کے آخرمیں گزشتہ ماہ انتقال کرنے والے سینئر صحافی غضنفر علی شاہی،پروفیسرخالد سعید اورڈاکٹر قاضی عابد کے درجات کی بلندی کے لئے دعا بھی کی گئی۔\395 srd

مزید :

ملتان صفحہ آخر -