نادرا نے ملک میں پہلی بار جنسی مجرموں کی شناخت کی سہولت متعارف کرا دی

 نادرا نے ملک میں پہلی بار جنسی مجرموں کی شناخت کی سہولت متعارف کرا دی

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

 
اسلام آباد(این این آئی) نیشنل ڈیٹابیس اینڈ رجسٹریشن اتھارٹی(نادرا)نے پاکستان میں پہلی بار جنسی مجرموں کی قومی رجسٹری، این ایس او آر کا اجرا ءکر دیا ہے جس کے ساتھ شہریوں کے لئے ایس ایم ایس کے ذریعے تصدیق کی سہولت بھی فراہم کی جا رہی ہے۔ جنسی جرائم میں سزایافتہ افراد کے اس ڈیٹابیس کی بدولت شہری اور ادارے ملک بھر میں کسی بھی جگہ سے ایسے افراد کی شناخت اور ٹریکنگ کر سکتے ہیں جو بچوں اور خواتین کی بے حرمتی سمیت جنسی جرائم میں سزا یافتہ ہیں۔ اس سلسلے میں قانون نافذ کرنے والے مختلف اداروں اور صوبائی حکومتوں کے ساتھ روابط بھی قائم کر دئیے گئے ہیں جن کی بدولت اس رجسٹری میں براہ راست تازہ ترین معلومات کا اضافہ ہوتا رہے گا۔ اس سہولت کا مقصد جنسی تشدد اور بدسلوکی کی روک تھام کے سلسلے میں شہریوں اور اداروں کو ایک ایسا پلیٹ فارم مہیا کرنا ہے جہاں سے وہ اپنی ضرورت کے مطابق فوری معلومات حاصل کر سکیں۔ شہریوں، ملازم رکھنے والے اداروں اور محکموں کو تصدیقی ایس ایم ایس کے ذریعے ایسے مجرموں کے بارے میں خبردار کر دیا جائے گا۔ چیئرمین نادرا طارق نے کہا کہ کسی بھی فرد کو ملازم رکھنے سے پہلے اس کا 13ہندسوں کا شناختی کارڈ نمبر شارٹ کوڈ 7000پر ایس ایم ایس کر کے تصدیق کی جا سکتی ہے کہ آیا وہ جنسی مجرم ہے یا نہیں۔ مجرم ہونے کی صورت میں اردو میں اس طرح کا جواب موصول ہو سکتا ہے: "نام اور ولدیت۔ خبردار!یہ شخص ایک مجرم ہے۔ اسے بچوں کے قریب جانے کی اجازت نہ دی جائے۔انہوں نے بتایا کہ شہری اب گھر، مسجد، کالج، یونیورسٹی وغیرہ میں کام کاج یا کسی بھی دیگر کام کے لئے ملازم رکھنے سے پہلے اس سروس کو استعمال کرتے ہوئے تسلی کر سکتے ہیں کہ آیا وہ شخص جنسی مجرم تو نہیں ہے۔
نادرا سہولت

مزید :

صفحہ آخر -