پی ٹی آئی نے کرپشن کے ریکارڈ توڑ دیئے ہیں، سردار بابک

  پی ٹی آئی نے کرپشن کے ریکارڈ توڑ دیئے ہیں، سردار بابک

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


پشاور(سٹی رپورٹر)عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی جنرل سیکرٹری سردار حسین بابک نے کہا ہے کہ پی ٹی آئی نے اپنے دور حکومت میں کرپشن کے ریکارڈ توڑ دیئے ہیں۔احتسابی ادارے مزید خاموش رہیں گے تو عوام ان کے دفاتر کے گیراؤ کا حق محفوظ رکھتے ہیں۔ پی ٹی آئی نے اپنے دور حکومت میں پختونخوا کا ہر شعبہ دونوں ہاتھوں سے لوٹا ہے۔ باچا خان مرکز پشاور سے جاری بیان میں صوبائی جنرل سیکرٹری سردار حسین بابک نے کہا ہے کہ خیبر بینک میں اپنے من پسند ایم ڈی کو بٹھا کر دیوالیہ اور دو کواٹر میں چھ ارب خسارے سے دوچار کر دیا ہے۔ پی ٹی آئی کی صوبائی حکومت نے اقرباء پروری اور کرپشن کے تمام ریکارڈ توڑ دیئے ہیں اور پختونخوا کو کربوں کا نقصان پہنچایا ہے۔ پی ٹی آئی کے سابق وزراء، اراکین قومی و صوبائی اسمبلی اور سینیٹرز نے حکومت میں اربوں کے اثاثے بنائے ہیں۔ کرپشن کے لئے راہ ہموار کرنے کی غرض سے عددی اکثریت کی بناء پر نئے قوانین، موجودہ قوانین میں ترامیم اور قوائد اور ضوابط میں تبدیلیاں کرکے ہر ناجائز کو جائز بنانے میں کوئی کثر نہیں چھوڑی ہے۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ پختونخوا کے وسائل کو دونوں ہاتھوں سیلوٹا گیا لیکن آج تک احتسابی اداروں نے پوچھ گچھ نہیں کی۔ انتشاری اور کرپٹ ٹولہ احتساب سے بھاگنے اور احتساب کے خوف سے تشدد پر اتر آتے ہیں اور اپنے مخالفین کو صبح شام گالیاں دینے سے باز نہیں آتے ہیں۔ پختونخوا کو دونوں ہاتھوں سے لوٹنے اور انتظامی بد حالی سے دوچار کرنے والے کسی رعایت کے مستحق نہیں۔ سردار حسین بابک کا کہنا تھا کہ دیگر شعبوں کی طرح محکمہ صحت کو بھی تباہی سے دوچار کیا گیا۔ نوشیروان برکی کے ہاتھوں صوبے کے ہسپتالوں میں اربوں کی کرپشن کی گئی، پوچھنا چاہتے ہیں کہ ڈاکٹر برکی آج کہاں ہیں؟احتسابی اداروں کی مزید خاموشی مجرمانہ غفلت اور کرپشن میں شراکت داری تصور ہو گی۔ انتشاری ٹولے نے پختونخوا کے ہر محکمہ اور شعبے کو کرپشن کیذریعے کھوکھلا کردیا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ نیب اور اینٹی کرپشن کو دھمکانے اور دھمکیاں دینے والے کب تک پختونخوا کا لوٹا ہوا مال ہضم کرینگے؟ وقت آگیا ہے کہ پختونخوا کو لوٹنے والوں سے ایک ایک پائی کا حساب لیا جائے۔ صوبے کے آمدن کے بہت بڑے ذریعے معدنیات سمیت ہر شعبے میں اربوں روپیہ کے کرپشن کرنے والے چور مچائے شور کے مصداق پر عمل پیرا ہیں اور سادہ لوح عوام کو دھوکا دینے کی مذموم کوشش میں مصروف ہیں۔