سمارٹ فون اور اعصابی بیماریاں!

 سمارٹ فون اور اعصابی بیماریاں!

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


سمارٹ فونز اب ہماری زندگی کا لازمی جزو بن چکے ہیں۔ نوجوان تو اپنا زیادہ تر وقت اسے استعمال کرتے ہوئے گزارتے ہیں لیکن سمارٹ فونز کا زیادہ وقت تک استعمال نوجوانوں کی آنکھوں کی بینائی اور کمر سمیت دیگر اعصابی بیماریوں کا باعث ثابت ہو سکتا ہے۔ یہ بات ایک نئی تحقیق میں سامنے آئی۔ برازیل کی Paulo Sao  سٹیٹ یونیورسٹی کی تحقیق میں بتایا گیا کہ بچے اور نوجوان اپنا بہت زیادہ وقت سکرینز کو دیکھتے ہوئے گزارتے ہیں۔ اکثر ان کے بیٹھنے کا انداز ایسا ہوتا ہے جو کمر درد اور دیگر مسائل کا باعث بنتا ہے۔ تحقیق میں ایسے متعدد عناصر دریافت کیے گئے جو ریڑھ کی ہڈی کی صحت کو نقصان پہنچاتے ہیں۔ تحقیق کے مطابق روزانہ 3 گھنٹے سے زیادہ وقت تک سمارٹ فونز کی سکرین کو دیکھتے ہوئے گزارنے سے آنکھوں کی بینائی بری طرح متاثر ہوتی ہے، اسی طرح پیٹ کے بل لیٹ کر فون دیکھنے کے نتیجے میں ریڑھ کی ہڈی کو نقصان پہنچ سکتا ہے۔اس تحقیق میں 14 سے 18 سال کی عمر کے 1628 افراد کو شامل کیا گیا تھاجس میں ان کی صحت کا جائزہ ایک سال سے زائد عرصے تک لیا گیا۔نتائج سے معلوم ہوا کہ سمارٹ فونز پر بہت زیادہ وقت گزارنے والے افراد میں کمر کی تکلیف اور ریڑھ کی ہڈی کے دیگر مسائل کا خطرہ بڑھ جاتا ہے، اس کے ساتھ وہ اعصابی بیماریوں میں بھی مبتلا ہو جاتے ہیں۔
تحقیق کے مطابق اس عادت کے نتیجے میں ریڑھ کی ہڈی کے ایک عام مسئلے کا خطرہ بڑھ جاتا ہے۔محققین نے بتایا کہ دنیا بھر میں 15 سے 35 فیصد افراد کو کمر میں درد کا سامنا ہوتا ہے اور کووڈ 19 کی وبا نے اس مسئلے کو زیادہ بدتر بنا دیا ہے۔محققین کا کہنا تھا کہ نتائج سے ثابت ہوتا ہے کہ روزمرہ کی عادات کس حد تک ہماری صحت کے لیے اہم ہوتی ہیں،مختلف امراض سے بچنے کے لیے خود احتیاط کرنے کی ضرورت ہوتی ہے۔اس تحقیق کے نتائج جرنل ہیلتھ کیئر میں شائع ہوئے۔

مزید :

ایڈیشن 1 -