بلوچستان میں زمیندار ایکشن کمیٹی کا صوبائی اسمبلی کے سامنے احتجاج چھٹے روز بھی جاری

بلوچستان میں زمیندار ایکشن کمیٹی کا صوبائی اسمبلی کے سامنے احتجاج چھٹے روز ...
بلوچستان میں زمیندار ایکشن کمیٹی کا صوبائی اسمبلی کے سامنے احتجاج چھٹے روز بھی جاری

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

کوئٹہ (ویب ڈیسک) بلوچستان میں زمیندار ایکشن کمیٹی کی جانب سے طویل لوڈشیڈنگ کے خلاف صوبائی اسمبلی کے سامنے جاری احتجاج چھٹے روز بھی جاری ہے۔

ڈان نیوز کے مطابق زمیندار ایکشن کمیٹی بلوچستان کا کہنا ہے کہ کوئٹہ الیکٹرک سپلائی کمپنی (کیسکو) کی جانب سے 24 گھنٹوں میں زرعی فیڈرز کو بمشکل 3 گھنٹے بجلی فراہم کی جارہی ہے جبکہ کیسکو حکام نے 6 گھنٹے بجلی فراہم کرنے کا وعدہ کیا تھا۔زمیندار ایکشن کمیٹی بلوچستان نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ تمام ٹیوب ویلز کو سولر سسٹم پر منتقل کیا جائے اور زمینداروں کو کھاد اور بجلی پر سبسڈی دی جائے۔

انہوں نے تنبیہ دی کہ اگر مطالبات تسلیم نہیں ہوئے تو بلوچستان کے تمام قومی شاہراہوں کو بند کردیں گے۔واضح رہے کہ گزشتہ روز وزیر اعظم شہباز شریف نے بلوچستان میں زرعی ٹیوب ویلوں کو شمسی توانائی پر منتقل کرنے کے عمل کو تیزی سے مکمل کرنے کا اعادہ کرتے ہوئے کہا تھا کہ وفاقی حکومت اس حوالے سے ہر ممکن مدد فراہم کرے گی۔

وزیر اعظم شہباز شریف کی زیر صدارت بلوچستان کے امور پر اہم اجلاس منعقد ہوا تھا جس میں وزیر اعلیٰ بلوچستان سرفراز بگٹی کی زیر قیادت حکومت بلوچستان کے وفد نے شرکت کی۔