میٹھی گولیوں سے علاج وقت اور پیسے کا ضیاع ہے :برطانیہ میں ہومیو پیتھی ادویات پر پابندی کاا مکان

میٹھی گولیوں سے علاج وقت اور پیسے کا ضیاع ہے :برطانیہ میں ہومیو پیتھی ادویات ...
میٹھی گولیوں سے علاج وقت اور پیسے کا ضیاع ہے :برطانیہ میں ہومیو پیتھی ادویات پر پابندی کاا مکان

  


لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) ہومیوپیتھی طریقہ علاج دنیا بھر میں مشہور ہے ،جرمن ہومیوپیتھک ادویات کا شہرہ تو دنیا کے کونے کونے میں گونجتا ہے ،جبکہ دنیا بھر کی طرح برطانیہ میں بھی اس طریقہ علاج سے مستفید ہونے والے افراد بلاشبہ لاکھوں کی تعداد میں ہیں لیکن دوسری طرف ہومیوپیتھی طریقہ علاج کے ناقدین اس علاج کو پیسے اور وقت کا ضیاع تصور کرتے ہیں ۔برطانیہ جہاں نیشنل ہیلتھ سروس کے ہومیوپیتھی سے متعلق بل جن کی مالیت تقریباً 40 لاکھ پاو¿نڈ ہے، جس میں ہومیوپیتھی کے ہسپتالوں کے اخراجات اور جرنل پریکٹشنروں (جی پی) کے نسخے شامل ہیںوہاں معلوم ہوا ہے کہ برطانوی وزرا اس بات پر غور کر رہے ہیں کہ ہومیوپیتھی کو علاج کے ان طریقوں کی فہرست میں ڈال دیا جائے جن پر پابندی ہے ۔بی بی سی کی ایک رپورٹ کے مطابق ہومیوپیتھی متازع طریقہ علاج ہے اوراس کے ناقدین کا کہنا ہے کہ اس میں مریضوں کو بےکار میٹھی گولیاں دی جاتی ہیں لہذاہومیوپیتھی پر انحصار درست نہیں ہے جبکہ برطانوی ادارے نیشنل ہیلتھ سروس کا کہنا ہے کہ ’اس بات کے کوئی معیاری شواہد نہیں ہیں کہ ہومیوپیتھی کسی بھی بیماری کے لیے موثر ہے۔برطانیہ کی ایک غیر سرکاری تنظیم گڈ تھنکنگ سوسائٹی خاصے عرصے سے مہم چلا رہی ہے کہ نیشنل ہیلتھ سروسز ہومیوپیتھی ادویات کو شیڈیول 1 میں ڈال دے۔ یہ وہ فہرست ہے جس کے اندر موجود ادویات کو ڈاکٹر تجویز نہیں کر سکتے۔اگر دواو¿ں کے سستے متبادل موجود ہیں یا پھر دوا پراثر نہیں تو اسے اس فہرست میں ڈالا جا سکتا ہے۔گڈ تھنکنگ سوسائٹی کی جانب سے اس کیس کو عدالت میں لےکر جانے کی دھمکی کے بعد شعبہ صحت کے قانونی مشیروں نے ای میل کی شکل میں جواب دیا ہے کہ وزرا نے ’اس سلسلے میں مشاورت کا فیصلہ کر لیا ہے۔

مزید : بین الاقوامی


loading...