ہاکی کے دوبارہ عروج کیلئے کھلاڑیوں کی بنیاد ی سکلز کو بہتر بنانا ہوگا

ہاکی کے دوبارہ عروج کیلئے کھلاڑیوں کی بنیاد ی سکلز کو بہتر بنانا ہوگا

لاہور(سپورٹس رپورٹر) ہاکی کے قومی کوچ اور اولمپئن کامران اشرف نے کہا ہے کہ پاکستان میں ہاکی کے عروج کو دوبارہ حاصل کرنے کے لئے کھلاڑیوں کی بنیاد ی سکلز کو بہتر بنانا ہوگا ۔ خصوصی گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ نیشنل ٹیم کا حصہ بننے والے کھلاڑیوں کی بنیادی سکلز کے بہتر نہ ہونے کی وجہ سے ٹیم کے کوچز کو بہت مشکل کا سامنا کرنا پڑتا ہے اور کھلاڑی بہتر پرفارمنس کا مظاہرہ نہیں کرپاتے ۔ہاکی کی موجودہ فیڈریشن نے اس ضرورت کو محسوس کرلیا ہے اور انہوں نے سکول کی سطح پر کھلاڑیوں کی بنیادی سکلز پر کام شروع کرنے کے لئے اقدامات کرنے شروع کردیئے ہیں جن کے نتائج مستقبل میں سامنے آئیں گے ۔کامران اشرف نے کہاکہ کسی کے پاس جادو کی چھڑی نہیں ہے کہ وہ راتوں رات ہاکی کے کھیل کو بہتر بنالے ۔پاکستان کی ٹیم ورلڈ کپ اور اولمپک میں رسائی حاصل نہیں کرسکی اور ٹیم کو بہتری کی طرف لانے کے لئے وقت درکار ہوگا ۔انہوں نے کہاکہ ملائشیا سمیت دنیا کی دیگر ہاکی ٹیمیں بہتر نہیں ہوئی ہیں بلکہ پاکستان ٹیم زوال کا شکار ہوئی ہے ۔ماضی میں بھی پاکستان کے ساتھ آسٹریلیا ،ہالینڈ ،جرمنی کا شمار ٹاپ کی ٹیموں میں ہوتا تھا لیکن آج بھی تینوں ٹیمیں ٹاپ پر ہیں لیکن پاکستان اور بھارت کی ٹیمیں زوال کا شکار ہوئی ہیں ۔ایک سوال کے جوا ب میں انہوں نے بتایا کہ پاکستانی کوچز کا فی باصلاحیت ہیں اور میرے خیال سے قومی ٹیم کی کوچنگ کے لئے انٹرنیشنل کوچز سے زیادہ بہتر قومی کوچز ہیں ۔میں ایک بار پھر اس بات کو دہراؤں گا کہ جب تک کھلاڑیوں کی بنیادی سکلز بہتر نہیں ہوتی اسوقت تک دنیا کا کوئی کوچ بھی ٹیم میں بہتری نہیں لاسکتا ۔ملک میں ہاکی کی اکیڈمیوں میں بھی کھلاڑیوں کی بنیادی سکلز پر کام کرنا ہوگا ۔ماضی میں کھلاڑی انفرادی طور پر محنت کرتے تھے اور ان کے اندر کھیلنے کا جذبہ ہوتا تھا لیکن آج کھلاڑیوں کو ہاکی کے کھیل میں زیادہ دلچسپی نہیں ہوتی ۔

کھلاڑیوں کو زیادہ سے زیادہ نوکریاں فراہم کرکے ہاکی کے کھیل میں دلچسپی پیدا کی جاسکتی ہے ۔ہاکی لیگ کا انعقاد بہت ضروری ہے ،لیگ سے نہ صرف کھلاڑیوں کو مالی فائدہ ہوگا بلکہ غیر ملکی کھلاڑیوں کے ساتھ کھیل کر ان کو تجربہ ملے گا اور اعتماد پیدا ہوگا ۔کامران اشرف نے ایک سوا ل کے جواب میں بتایا کہ ہاکی میں ماضی کے مقابلہ میں زیادہ پیسہ ہے لیکن کھلاڑیوں میں جذبہ اور محنت کا فقدان ہے ۔بھارت میں ہاکی کے کھلاڑیوں کی مالی حالت دنیا میں سب سے بہتر ہے لیکن ان کی ہاکی کا معیار بھی بہتر نہیں ہے ۔انہوں نے کہاکہ ہاکی کی بہتری کے لئے موجودہ فیڈریشن کو کام کرنے کا وقت ملنا چاہئے تاکہ وہ اپنے منصوبوں کو عملی جامہ پہنا کر ہاکی کی ترقی میں اہم کردار ادا کرسکے

مزید : کھیل اور کھلاڑی


loading...