حکومت کو ذاتی اور پارٹی مفادات سے بالاتر اقدامات کرنا ہوں گے،عبدالقادر خاموش

حکومت کو ذاتی اور پارٹی مفادات سے بالاتر اقدامات کرنا ہوں گے،عبدالقادر خاموش

لاہور(نمائندہ خصوصی)جمعیت علما اہل حدیث کے چیرمین قاضی عبدالقدیر خاموش نے نیشنل ایکشن پلان پر عملدرآمد میں حکومتی کارکردگی پر تنقید کرتے ہوئے کہا ہے کہ کور کمانڈرز کانفرنس میں گوڈ گورننس پر تحفظات کے اظہارسے جمہوری اداروں کو نقصان نہیں ہوگا۔ حکومت کو ذاتی اور پارٹی مفادات سے بالاتر اقدامات کرنا ہوں گے۔اب تک دہشت گردی کے خلاف نیم دلانہ اقدامات سے قوم میں مایوسی بڑھی ہے۔جمہوریت میں ہی قوم کا مستقبل ہے۔ عوام نے ہمیشہ آمریتوں کا مقابلہ کیا ہے۔ حکومت پریشان نہ ہو۔ایگزیکٹو کمیٹی کے اجلاس سے خطاب میں قاضی عبدالقدیر خاموش نے کہا کہ انتہا پسندی ، فرقہ واریت اور دہشت گردی نے ملک کو ناقابل تلافی نقصان پہنچایا ہے۔اس کے خلاف سیاسی اور عسکری قیادت کا مشترکہ نقطہ نظر ہونا ضروری ہے۔ وسیع تر قومی مفادکے آڑے کسی کی دوستی، شخصیت اور ادارہ رکاوٹ نہیںآناچاہیے۔ انہوں نے کہا کہ وفاق المدارس کے حمایتی دہشت گردوں کے خلاف ڈھال بن جاتے ہیں۔جس کی وجہ سے نیشنل ایکشن پلان پر مطلوبہ نتائج حاصل نہیں کئے جاسکے۔ لیکن اس کے ساتھ انٹیلی جینس اداروں کی کارکردگی بھی سوالیہ نشان ہے۔ان کا کہنا تھا کہ قوم کو خالص سیاست کی ضرورت ہے، سیاسی بروکرز نہیں۔ قاضی عبدالقدیر خاموش نے کہا کہ شریف برادران اپنی ناک سے باہر بھی سوچا کریں۔ ان کی عنایات کا مرکز صرف چند لوگ ہی ہوتے ہیں۔ انہیں قومی لیڈرز کے طور پر سوچنا ہوگا۔

مزید : میٹروپولیٹن 1


loading...