انصاف کے متلاشی شہری سے وکیل نے گاڑی اورقیمتی اشیاہتھیا لیں

انصاف کے متلاشی شہری سے وکیل نے گاڑی اورقیمتی اشیاہتھیا لیں

لاہور (کرائم سیل) انصاف کے لئے عدالت کا دروازہ کھٹکھٹانے کے لئے وکیل کی خدمات حاصل کرنے والا وکیل ہی کے ہاتھوں لُٹ گیا۔ وکیل نے دفتر بلو ا کر ساتھیوں کے ہمراہ تشدد کا نشانہ بنایا، مختلف چیکوں پر زبردستی دستخط کروائے اور قیمتی اشیاء سے محروم کردیا۔متاثرہ شخص نے وزیر اعلیٰ پنجاب اور اعلیٰ پولیس حکام سے واقعہ کا نوٹس لیکر ملزم کے خلاف مقدمہ کے اندراج کی اپیل کی ہے ۔ 79/A/2ک غالب مارکیٹ گلبرگ کے رہائشی مراد مصطفی نے ڈی آئی جی آپریشن لاہور اور تھانہ سول لائن میں ملزم شہباز بخاری کے خلاف مقدمہ کے اندراج کے لئے درخواست دی ہے جس کے مطابق اس نے کچھ عرصہ قبل ایک فون کمپنی سے ہاؤس کیپنگ کا ٹھیکہ لیا ۔تاہم معاہدہ کے مطابق کام مکمل ہونے کے باوجو د متعلقہ کمپنی نے اسے ادائیگی نہ کی ۔جس پر اس نے سیشن کورٹ میں مقامی وکیل شہباز بخاری ایڈوکیٹ کی وساطت سے کیس دائر کیا۔ وکیل نے اس کیس کے لئے مراد مصطفی سے دولاکھ روپے فیس طے کی ۔تاہم اس دوران متعلقہ کمپنی نے اسکے ساتھ ’’آؤٹ آف کورٹ‘‘ معاملات طے کرلئے ۔ اس نے وکیل کو بھی فیس کی ادائیگی کردی۔ تاہم 5نومبر کوملزم شہباز بخاری نے اسے اپنے موبائل سے فون کرکے فین روڈ پر واقع اپنے آفس بلوایا۔ تاہم جب وہ وہاں پہنچا تو وکیل نے اپنے مسلح ساتھیوں سمیت اسے تشدد کا نشانہ بنایا ،قیمتی اشیاء چھین لیں ۔ملزم نے اس دھمکی دی کہ وہ اسے مزید 20لاکھ روپے ادا کرے ور نہ وہ اسے جان سے مار دے گا۔ ملزم نے اس کی گاڑی سے زبردستی چیک بُک نکال لی اور گن پوائنٹ پر اس سے مختلف چیکوں پراور گاڑی کے کاغذات پرسائن کروالئے ۔ بعد ازاں ملزم نے مراد کو یہ کہہ کر چھوڑ دیا کہ اگر کسی کو بتایا تو تمہاری خیر نہیں ۔مراد نے الزام لگایا ہے کہ شہباز بخاری نے وکیلوں کا ایسا گینگ بنا رکھا ہے جو سائلین سے فیس کے علاوہ انہیں ڈرا دھمکا کر بڑی بڑی رقمیں بٹورتے ہیں ۔

مزید : علاقائی