پیپلز پارٹی کی عوامی رابطہ مہم میں رکاوٹیں ڈالی جا رہی ہیں، نجمی عالم

پیپلز پارٹی کی عوامی رابطہ مہم میں رکاوٹیں ڈالی جا رہی ہیں، نجمی عالم

کراچی (اسٹاف رپورٹر) پیپلز پارٹی کراچی ڈویژن کے صدر نجمی عالم نے کہا ہے کہ 5 دسمبر کو کراچی میں ہونے والے بلدیاتی انتخابات کی تیاریوں کے لیے پیپلز پارٹی کی عوامی رابطہ مہم میں رکاوٹیں ڈالی جا رہی ہیں ۔ متحدہ قومی موومنٹ ( ایم کیوایم ) اور لیاری گینگ وار سے تعلق رکھنے والے دہشت گرد پیپلز پارٹی کے کارکنوں اور ہمدردوں کو نشانہ بنا رہے ہیں ۔ ان اوچھے ہتھکنڈوں کے باوجود پیپلز پارٹی بلدیاتی انتخابات میں میدان خالی نہیں چھوڑے گی ۔ الیکشن کمیشن اور سندھ حکومت اس صورت حال کا نوٹس لیں ۔ کراچی میں بلدیاتی انتخابات کے موقع پر سکیورٹی کے فل پروف انتظامات کیے جائیں تاکہ عوام کو آزادانہ طریقے سے حق رائے دہی استعمال کرنے کا موقع مل سکے ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے جمعہ کو پیپلز پارٹی میڈیا سیل میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ اس موقع پر وزیراعلیٰ سندھ کے معاونین خصوصی وقار مہدی، راشد ربانی، ندیم بھٹو، سردار خان ،منظور عباس اور آغا سعیدموجود تھے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان پیپلز پارٹی کی حکومت نے دہشت گرد، بھتہ خور، ٹارگٹ کلرز اوردیگر جرائم میں ملوث افراد کے خلاف آپریشن کیا جس کے تحت کراچی امن وامان میں تیزی سے بہتری آرہی ہے ۔ اس آپریشن کے تحت جودہشت گرد جرائم پیشہ ، ٹارگٹ کلرز ، بھتہ خور گرفتار ہوئے ان میں اکثریت کا تعلق ایم کیو ایم اور لیاری گینگ وار سے ہے۔ان دہشت گردوں کے سرپرستوں نے اپنی شکست کو دیکھتے ہوئے پاکستان پیپلز پارٹی کے خلاف مذموم ہتھکنڈوں پر اتر آئی ہے۔ آئے دن نت نئے الزامات لگا کر عوام کو گمراہ کرنے کی ناکام کوشش کی جاری ہے اور اب جب سندھ میں بلدیاتی انتخابات کے تحت تیسرے مرحلے میں 5 دسمبر کو کراچی ڈویژن میں انتخاب ہونگے اور جیسے جیسے تاریخ نزدیک آرہی ہے ویسے ویسے متحدہ قومی موومنٹ کی منفی سرگرمیاں ایک بار پھر بڑھنا شروع ہوگئی ہیں ۔ایک طرف مظلومیت کا شور مچایا جارہا ہے اور دوسری طرف دہشت گردی کی روایت کو برقرار رکھے ہوئے چور مچائے شور کے مصداق ہے۔نجمی عالم نے کہا کہ ہم کراچی کی باشعور عوام کو بتانا چاہتے ہیں کہ ماضی کی طرح دہشت گردپاکستان پیپلز پارٹی کو انتخابات سے دور رکھنے کیلئے دوبارہ اکٹھاہونا شروع ہوگئے ہیں تمام جرائم پیشہ، ٹارگٹ کلرز نے منظم ہوکر پیپلز پارٹی کے خلاف مہم شروع کر دی ہے اس کی تازہ مثال حیدرآباد کالونی کا سینئر ورکر رانا عامر کو جیل چورنگی پر گولیاں ماری گئی جو بعد ازاں اسپتال میں دوران علاج شہید ہوگیا اورکل کورنگی میں پیپلز پارٹی کے امیدوار اقبال ساند کے بھائی کے گھر ایم کیو ایم کے شرپسند عناصر آئے اور زبردستی ان کے گھر پر جھنڈا لگانے کی کوشش کی انہیں ڈرایا دھمکایا گیا اور حلقے میں پیپلز پارٹی کے کارکنوں، ہمدردوں میں خوف وہراس پھیلایاجارہا ہے۔جس میں ایم کیو ایم کے کارکنان کورنگی سیکٹر یونٹ 78 یونٹ انچارج محمد ناصر ،جنید اورعامر صدیقی ملوث ہیں۔ اسی طرح PS-96 اور بلدیہ ٹاؤن میں بھی پیپلز پارٹی کے امیدواروں کو دھمکیاں دی جارہی ہیں، پینا فلیکس، بینرز اورجھنڈے ہٹائے جارہی ہے۔ واضح رہے کہ بلدیہ ٹاؤن میں پیپلز پارٹی کے 100سے زیادہ کارکن و ذمہ داران دہشت گرد تنظیم ایم کیو ایم کی زیادتی کا نشانہ بنے ہیں۔انہوں نے کہا کہ کل رات پاکستان پیپلز پارٹی سٹی ایریا 109 کے صدر اور یوسی 8لیاری کے چیئرمین کے امیدوار حاجی عبدالمجید کے مرکزی الیکشن آفس پر ان کے بیٹوں پر فائرنگ کی اور آج پیپلز لیبر سندھ کے جنرل سیکریٹری اسلم سموں پر کریکر حملہ کیا گیاجس میں اسلم سموں سمیت پیپلز پارٹی کے 5کارکن زخمی ہوئے لیاری میں گینگ وار اور شہر کے دیگر علاقوں میں کراچی کی عوام کو جو پیپلز پارٹی نے امن دیا ہے اور آج کراچی کی عوام آنے والے بلدیاتی الیکشن میں پیپلز پارٹی کی طرف دیکھ رہے ہیں اور یہ دہشت گرد عناصر اپنی شکست کو سامنے دیکھ کر بوکھلاکر اوچھے ہتھکنڈے استعمال کررہے ہیں ۔ نجمی عالم نے کہا کہ ہم یہ بات واضح کر دینا چاہتے ہیں کہ اگر پیپلز پارٹی کے کسی کارکن کو نقصان پہنچا تو اس کی تمام تر ذمہ د اری انہی دہشت گردوں پر ہوگی۔ اس آپریشن سے عوام مطمئن ہے اور عوام ان دہشت گردوں کے خلاف آزادانہ اپنا حق رائے دہی استعمال کرنا چاہتے ہیں۔کراچی کے عوام اس الیکشن میں ہر اس گروہ کے خلاف جس کے ہاتھ میں بندوق ہوگی اس کے خلاف اپنا ووٹ دے کر جمہوری اداروں کے استحکام میں معاون ہونگے۔ ہم وزیراعلیٰ سندھ سید قائم علی شاہ، وزیر داخلہ سہیل انور سیال ،ڈی جی رینجرز اور سندھ پولیس کے اعلیٰ افسران اور دیگر قانون نافذ کرنے والے اداروں سے اپیل کرتے ہیں کہ ان تمام شکایات کا سدباب کریں اور دہشت گردوں جرائم پیشہ عناصروں کی بیخ کنی مکمل کی جائے اور امن وامان قائم رکھا جائے اور کراچی کے عوام کو آزادنہ بلدیاتی الیکشن میں ووٹ ڈالنے کا حق دیا جائے۔ اس موقع پر وقار مہدی نے کہاکہ پیپلز پارٹی عوامی جماعت ہے ۔ ہم سیاسی طریقے سے انتخابات میں حصہ لے رہی ہیں تاہم جو قوتیں کراچی میں مختلف جماعتوں کو انتخابی مہم چلانے میں مشکلات پیدا کر رہی ہیں ، وہ سمجھ لیں کہ ہم نے 2013ء کے انتخابات میں بھی حالات کا مقابلہ کیا اور اب بھی کراچی میں بھرپور انداز میں کراچی میں حصہ لیں گے ۔ انہوں نے کہا کہ کراچی میں بلدیاتی انتخابات کے لیے عوامی رابطہ مہم کا آغاز کر دیاگیا ہے ۔ عوام سے اپیل کرتے ہیں کہ وہ امن کے پیغام کو عام کرنے والی جماعت پیپلز پارٹی کو ووٹ ڈالیں تاکہ کراچی میں جیالا میئر منتخب ہو کر عوام کی خدمت کر سکے ۔

مزید : کراچی صفحہ آخر