ٹیکس وصولی کیلئے کاروباری افراد کی شہرت خراب کرنے سے احتراز کیا جائے: ہائیکورٹ

ٹیکس وصولی کیلئے کاروباری افراد کی شہرت خراب کرنے سے احتراز کیا جائے: ...

لاہور(نامہ نگار خصوصی )لاہورہائیکورٹ میں پنجاب ریونیواتھارٹی کی تشکیل اورسیلزٹیکس وصولی کے لئے مانیٹرننگ کے طریقہ کارکے خلاف دائردرخواست پرریونیواتھارٹی کوہدایت کی ہے کہ کاروباری لوگوں کی شہرت خراب کرنے سے احتراز کیا جائے تاہم ٹیکس نادہندگان کے خلاف قانون کے مطابق کارروائی جاری رکھی جائے ۔مسٹر جسٹس شاہد جمیل خان نے عدالت میں موجود پنجاب ریونیواتھارٹی کی ایڈیشنل کمشنرعائشہ رانجھا کو مخاطب کرکے مزید ریمارکس دیئے کہ پہلے مرحلے میں کاروبارسیل کرنامناسب نہیں،کاروبارچلے گاتولوگ ٹیکس دیں گے،ایساطریقہ اپنائیں کہ مانیٹرنگ کے بارے میں گاہکوں کو پتہ نہ چلے تا کہ کاروبا متاثر نہ ہو۔فاضل جج نے فیشن ڈیزائنر حسن شہریارکی درخواست پرسماعت کی۔درخواست گزارکے وکیل نے موقف اختیارکیاکہ وہ سیلزکے مطابق پنجاب ریونیواتھارٹی کوٹیکس کی ادائیگی کررہے ہیں اس کے باوجودریونیواتھارٹی نے مانیٹرنگ کے لئے افسرتعینات کردیاجس سے ان کے کاروبارمتاثرہورہے ہیں۔آئین کے آرٹیکل 18اور25کے مطابق کوئی شخص یاادارہ جائزکاروبارمیں مداخلت نہیں کرسکتا۔ریونیواتھارٹی کے لیگل ایڈوائزربیرسٹر احمدپنسوتانے موقف اختیارکیاکہ درخواست گزارسیل کے مطابق ٹیکس کی مکمل ادائیگی نہیں کررہااورنہ ہی معلومات فراہمی میں تعاون کررہاہے۔قانون کے مطابق ایچ ایس وائی کی مانیٹرنگ کی جارہی ہے۔عدالت نے ریمارکس دیئے کہ آئین ہرشخص کوکاروبارکی اجازت دیتاہے،قانونی تقاضے پورے کئے بغیرکسی کاروبار کوپہلے مرحلے میں سیل نہیں کیاجاسکتا۔عدالت نے ایڈیشنل کمشنرعائشہ رانجھاکوہدایت کہ وہ ٹیکس وصولی کے لئے کارروائی کی میڈیاتشہیرسے پرہیزکریں کیونکہ اس سے کاروباری لوگوں کی شہرت خراب ہورہی ہے۔عدالت نے درخواست گزار کی بکری کامکمل ریکارڈ 8دسمبر کوپیش کرنے کاحکم دیتے ہوئے مزید سماعت ملتوی کردی ۔

مزید : صفحہ آخر