کنسرٹ ہال پر حملہ کرنے والا فرانسیسی ہے، پولیس ،دہشت گردوں کے بیلجیئم سے آنے کا شبہ،بیلجیئم اور فرانس کے درمیان سرحد 70سال میں پہلی بار بند

کنسرٹ ہال پر حملہ کرنے والا فرانسیسی ہے، پولیس ،دہشت گردوں کے بیلجیئم سے ...
کنسرٹ ہال پر حملہ کرنے والا فرانسیسی ہے، پولیس ،دہشت گردوں کے بیلجیئم سے آنے کا شبہ،بیلجیئم اور فرانس کے درمیان سرحد 70سال میں پہلی بار بند

  

پیرس ( مانیٹرنگ ڈیسک) پیرس میں دہشت گردانہ کارروائی کے بعد فرانس اور پیرس کے درمیان سرحد کو بند کر دیا گیا۔ اس سرحد کو ستر سال میں پہلی بار بند کیا گیاہے۔پولیس کا کہنا ہے کہ کنسرٹ ہال پر حملہ کرنے والا فرانس کا باشندہ ہے۔ اس سے پہلے دنیا بھر میں بہت سے سوشل میڈیا صارفین ان حملوں کو شامی باشندوں کی کارروائی قرار دے رہے تھے کہ دہشت گرد شامی مہاجرین کے روپ میں یورپ داخل ہوگئے ہیں۔ذرائع کے مطابق دہشت گردوں کی کار بیلجیئم میں پارک کرنے کے شواہد ملے ہیں جس سے ثابت ہوتا ہے کہ وہ وہاں سے آئے۔دوسری طرف بیلجیئم نے اپنے شہریوں کو بلا ضرورت فرانس کے سفر سے روک دیا ہے اور برسلز سے آنے والی پروازوں کی نگرانی انتہائی سخت کردی گئی ہے۔ فرانس جانے والے ہائی ویز بھی اس وقت سکیورٹی فورسز کے کنٹرول میں ہیں اور وہاں لمبی لمبی لائنیں لگی ہیں۔ ان حملوں کے بعد پیرس میں کرفیو نافذ کر دیا گیا تھا جس کو بعد میں ہٹا لیا گیا لیکن شہریوں کو گھروں سے باہر نہ نکلنے کی ہدایت کی گئی ہے۔ پولیس کے مطابق 300سے زائد افراد زخمی ہیں جن میں سے 80کی حالت تشویشناک ہے

مزید : بین الاقوامی /اہم خبریں