مبینہ زہر خوانی سے دوبچوں کی ہلاکت ، والد کی مدعیت میں مقدمہ درج کرلیا گیا

مبینہ زہر خوانی سے دوبچوں کی ہلاکت ، والد کی مدعیت میں مقدمہ درج کرلیا گیا
مبینہ زہر خوانی سے دوبچوں کی ہلاکت ، والد کی مدعیت میں مقدمہ درج کرلیا گیا

  

کراچی (ڈیلی پاکستان آن لائن) کراچی میں مبینہ طور پرزہریلا کھانا کھانے سے دوبچوں احمدد اورمحمدکی ہلاکت کے سلسلے میں مقدمہ درج کرلیاگیا ہے ، مقدمہ بچوں کے والد کی مدعیت میں درج کیا گیا ۔

دنیا نیوز کے مطابق ایک روز قبل کراچی میں زمزمہ ریسٹورنٹ سے کھانا کھا کر مبینہ طور پر زہر خوانی شکار ہوکر جاں بحق ہونیوالوں بچوں محمد اور احمد کا مقدمہ مقامی تھانہ میں بچوں کے والد کی مدیت میں درج کرلیا گیا ہے ، اس موقع پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے بچوں کے والد کا کہنا تھا کہ بچے روز ہی دودھ پیتے تھے جبکہ اس دن انہوں نے کینڈی بھی کھائی تھی ، والد نے امکان ظاہر کیا کہ ہو سکتا ہے کینڈی زہر آلود ہو ۔

واضح رہے کہ بچوں کی ہلاکتوں کے المنا ک واقعہ کے بعد سندھ فوڈ اتھارٹی کی ٹیم نے ریسٹورنٹ پر چھاپہ، انتظامیہ کی جانب سے کچن اور گودام میں موجود خام مال منتقل کرنے کی کوشش ناکام بنا دی تھی، کئی کلو خراب گوشت، زائد المیعاد شربت کی سینکڑوں بوتلیں اور دیگر اشیاء  آمد کرلیں ۔

حکام کا کہنا ہے کہ سامان منتقل کرنے والے مزدوروں سے پوچھ گچھ کی گئی تو پتہ چلا کہ ریسٹورنٹ کے مالک نے انہیں خام مال کالے تھیلوں میں بھر کر کہیں دور پھینکنے کا کہا، ریسٹورنٹ مالکان غائب ہیں اور ان سے کسی قسم کارابطہ نہیں ہورہا ہے ۔

پولیس کے مطابق اسی روز جس دن بچوں اور ان کی والدہ نے ریسٹو رنٹ سے کھانا کھایا تقریباً تین سو افراد نے اسی دن ریسٹورنٹ سے کھانا کھایا، شہر کے تمام ہسپتال چیک کئے لیکن فوڈ پوائزن کا کوئی کیس نہیں مل سکا ، پولیس کا کہنا ہے کہ خاندانی امور سمیت دیگر عوامل پر بھی تفتیش کا عمل جاری ہے اور ہسپتال میں زیر علاج بچوں کی والدہ کے مکمل صحت یاب ہونے کا انتظار کیا جا رہا ہے، جس کا بیان تفتیش کے عمل میں انتہائی اہمیت کا حامل ہوگا ۔

مزید : قومی /جرم و انصاف