لنڈی کوتل میں امن و امان کی صوتحال ، دو افراد کا قتل ، سیکورٹی پر سوالیہ نشان

لنڈی کوتل میں امن و امان کی صوتحال ، دو افراد کا قتل ، سیکورٹی پر سوالیہ نشان

خیبر (نمائندہ پاکستان)لنڈیکوتل بازار میں ایک مہینے میں دو افراد کی قتل اور ملزمان فرار ہو نا بازار کی سیکورٹی پر سوالیہ نشان بن گئی ہے؟ بازار کے تاجروں میں خوف وہراس پائی جا تی ہے انتظامیہ لائن آفیسرز اور دوسرے خاصہ دار اور لیویز فورس کے دفتر اور رہائش بھی بازار میں ہیں لیکن اسکے باجود شام کے وقت نوجوان اور بزرگ شخص کی قتل سے انتظامیہ اور دوسرے ادارے کی کارکردگی کھل کر سامنے آگئی ہیں ،ذمہ داروں کے خلاف کاروائی کب کی جا ئیگی ؟ضلع خیبر لنڈیکوتل کی تا ریخی بازار اور کارباور کے حوالے سے جانا پہچانا جا تا ہیں خیبر پختونخواکے مختلف اور دور درازعلاقوں سے لوگ لنڈیکوتل بازار میں شاپنگ کیلئے آتے ہیں لیکن گز شتہ ایک مہینے میں دوافراد قتل کئے گئے لیکن تاحل ملزمان قانون کی گرفت سے باہر ہیں بازار میں لاشیں پھینکنا اور ملزمان فرار ہو نے سے تاجروں سمیت خریداربھی شدید تشویش میں مبتلا ہو گئے ہیں لنڈیکوتل بازا ر میں خیبر پختونخوا کے دوسرے علاقوں کے لوگ بھی یہاں کاروبار کرتے ہیں اور انکی لنڈیکوتل بازار میں اپنی دوکانیں بھی ہیں اور وہ یہاں بازار میں رہائش پذیر بھی ہیں انکو سیکورٹی دینا انتظامیہ کی زمہ داری ہیں دوافراد کی قتل ہونے کے بعد بازار میں کاروبار پر شدید اثر پڑ سکتا ہیں لیکن انتظامیہ اور دوسرے سیکورٹی اداروں نے خاموشی اختیا ر کر نا معنی خیز ہیں اس سلسلے میں بازار کے تاجر اور لنڈیکوتل فلاحی تنظیم کے چیئر مین بنارس شینواری نے بتا یا کہ بازار کی سیکورٹی انتطامیہ کی ذمہ داری ہیں دوافراد قتل کی تفیش کیا جائے اور املزمان کو گرفتا ر کرنے کیلئے اقدمات کیا جانا چاہئے اس سلسلے میں لنڈیکوتل لائن آفیسر ٹیکاخان آفریدی نے بتا یا کہ گزشتہ روز نوجوان کی قتل میں دس افراد کو تفتیش کی غرض سے حراست میں لے گئے ہیں اس سلسلے میں کوئی غفلت نہیں کرینگے لنڈیکوتل بازار تا ریخی بازار ہیں اس کی سیکورٹی پر کوئی سمجھوتا نہیں کیا جائے گا اور اس سلسلے میں بازار کی فل پروف سیکورٹی کیلئے پلاننگ کی ہے

مزید : پشاورصفحہ آخر