وکلاء کا اپرسوات کو ضلع کا درجہ دینے اور جوڈیشل کمپلیکس بنانے کیلئے احتجاج

وکلاء کا اپرسوات کو ضلع کا درجہ دینے اور جوڈیشل کمپلیکس بنانے کیلئے احتجاج

مٹہ ( نمائندہ پاکستان) اپر سوات کو ضلع دینے اور مٹہ جوڈیشنل کمپلیکس بنانے کیلئے مٹہ بار ایسوسی ایشن کی وکلاء برادری کا احتجاج وزیر اعلیٰ محمود خان اپنا وعدہ پورا کرکے اپر سوات کو ضلع کا درجہ دینے کیلئے عملی اقدامات اٹھائے اگر ضرورت پڑ گئی تو پشاور جاکر اپنے مطالبات کیلئے احتجاج کرنے سے دریغ نہیں کرینگے وکلاء برادری سے وکلاء کا خطاب تفصیلات کی مطابق گذشتہ روز مٹہ بار ایسوسی ایشن اپر سوات کی وکلاء برادری نے مٹہ میں اپرسوات کو ضلع کا درجہ دینے اور مٹہ جوڈیشنل کمپلیکس کو بنانے کیلئے احتجاج کی جس مٹہ بار کی تمام وکلاء نے شرکت کی اس موقع پر وکلاء سے خطاب کرتے ہوئے مقررین نے کہا کہ وزیر اعلیٰ محمود خان نے اپر سوات کو ضلع کا درجہ دینے اور مٹہ میں جو ڈیشنل کمپلیکس بنانے کا اعلان کیا تھا لیکن تاحال دونوں اہم مطالبات پر عمل درامد نہیں ہوا ہے اسلئے ہم وزیر اعلیٰ محمود خان سے اپیل کرتے ہیں کہ وہ اپنے وعدوں کو عملی جامہ پہنا کر فی الفور اپر سوات کو عملی طور پر ضلع کا درجہ دیں اور مٹہ جو ڈیشنل کمپلیکس پر فوری طور پو کام شروع کریں مقررین نے کہا کہ اگر ہمارے مطالبات پوری نہیں کی گئی تو پھر ہم پشاور میں احتجاج کرنے پو مجبور ہونگے اس موقع پر اپر سوات کو ضلع کا درجہ دینے اور مٹہ جو ڈیشنل کمپلیکس بنانے کی حق میں متفقہ قراداد بھی منظور کی گئی

مزید : پشاورصفحہ آخر