آسیہ رہائی کیخلاف مظاہرین پر قائم مقدمات واپس لئے جائیں‘ حزب اللہ جان حقانی

آسیہ رہائی کیخلاف مظاہرین پر قائم مقدمات واپس لئے جائیں‘ حزب اللہ جان حقانی

چارسدہ (بیورو رپورٹ) آسیہ مسیح کے رہائی کے خلاف احتجاج پر ختم نبوت اور جمعیت علمائے اسلام کے قائدین اور کارکنان پر درج ایف آئی آر واپس لیا جائے ۔ آسیہ مسیح کیس پر نظر ثانی کرکے 1973کے آئین کے مطابق فیصلہ دیں۔ پیر خزب اللہ جان حقانی ۔ تفصیلات کے مطابق عالمی تحفظ ختم نبو ت چارسدہ کا اجلاس زیر صدارت ضلعی امیر پر حزب اللہ جان حقانی منعقد ہوا۔ اجلاس میں ضلعی مبلغ مولانا عبدالواحد ، ضلعی ناظم نجیب السلام ، مفتی طاہر اللہ ، ضلعی ترجمان حاجی حنیف اللہ حسرت ، حافظ نذیر گل ، مولانا محمد یاسر خان ، قاری محمد جان ، مولانا عبدالوہاب سمیت ضلع بھر کے ذمہ داران نے شرکت کی ۔ اجلاس سے خطاب کر تے ہوئے ضلعی امیر پیر خزب اللہ جان حقانی اور دیگر مقررین نے کہا کہ سپریم کورٹ کا فیصلہ آسیہ مسیح کے حق میں آیا جس پر ملک بھر کے مسلمانوں کی دل آزاری ہوئی اور ایک تحریک کی شکل اختیار کرکے تمام مسلمانوں نے ناموس رسالت پر مر مٹنے کیلئے میدان میں آگئے ۔ تحریک میں ختم نبوت اور جمعیت علمائے اسلام کے قائدین اور کارکنوں کے خلاف حکومت نے ایف آئی آر درج کرائی ۔ انہوں نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ جمعیت علمائے اسلام کے قائدین اور کارکنوں کے خلاف درج ایف آئی آر واپس لی جائے بصورت دیگر اس کے خلاف ایک تحریک شروع کی جائیگی جس کی تمام ذمہ داری حکو مت پر ہو گئی ۔ انہوں نے کہاکہ ناموس رسالت ﷺ پر تمام مسلمان مر مٹنے کیلئے تیار ہیں اور کسی قسم کی قربانی سے دریغ نہیں کرینگے اس لئے سپریم کورٹ کو اپنے فیصلے پر نظر ثانی کرکے ناموس رسالت کا حق ادا کریں ۔ انہوں نے کہاکہ 2دسمبر کو چارسدہ میں ختم نبوت کا ایک عظیم الشان کانفرنس منعقد ہو گا جس میں مرکزی ، صوبائی اور ضلعی قائدین شرکت کرینگے ۔ کانفرنس کے کامیابی کیلئے ضلعی تنظیم نے کمیٹیاں بنائیں تاکہ وہ دن رات محنت کرکے اس کانفرنس کو کامیاب کریں ۔ انہوں نے کہاکہ کانفرنس سے عالم کفر اور قادیانیت پر لزہ طاری ہو جائیگا۔ اس موقع پر ایک قرار داد کے ذریعے واضح کیا گیا کہ 45دن پہلے تنگی سے ختم نبوت کے کارکن مولانا جہانگیر شہزاد کو مسجد سے ایجنسیوں نے گرفتار کیا ہے ۔حکومت فوری طور پر مولانا جہانگیر کو عدالت میں پیش کریں یا باعزت طور پر رہا کریں۔

مزید : پشاورصفحہ آخر