لمز نیشنل انکوبیشن سینٹر لاہورکی کاروباری نوجوانوں کیلئے گریجویشن تقریب

لمز نیشنل انکوبیشن سینٹر لاہورکی کاروباری نوجوانوں کیلئے گریجویشن تقریب

لاہور(پ ر)سٹی فاؤنڈیشن(سٹی) نے برٹش ایشین ٹرسٹ اور لمز نیشنل انکوبیشن سینٹر (این آئی سی) لاہور کے اشتراک سے پسماندہ شہری علاقوں کے 61 کاروباری نوجوانوں کے لئے گریجویشن کی تقریب کا انعقاد کیا۔ ان نوجوانوں کا کاروبار پائلٹ پراجیکٹ کے طور پر شروع کیا گیا۔ وزیر اعظم کے معاون خصوصی اور وزیر مملکت برائے اور سیز پاکستانیز و ترقی انسانی وسائل سید ذوالفقار بخاری تقریب کے مہمان خصوصی تھے۔ برٹش ایشیئن ٹرسٹ، این آئی سی اور سٹی فاؤنڈیشن نے 2016ء میں ’’ سٹی پاتھ ویز ٹو پراگریس انی شی ایٹو‘‘ کے تحت اربن یوتھ پراجیکٹ کا آغاز کیا تھا جس کا مقصد شہری نوجوانوں کو آج کی اقتصادیات میں متحرک کرنا تھا۔یہ پروگرام نوجوانوں کے لئے کاروبار اور قائدانہ تربیت کے ذریعے بے روزگاری میں کمی اور پائیدار اقتصادی ترقی کو بڑھانے سے متعلق ہے۔ اس پروگرام کے نتیجے میں 100 سے زائد ملازمتیں پیدا ہوئیں، 30 سے زائد کاروبار متعارف کرائے گئے اور 60 بزنس پلان تیار کئے گئے۔یہ منصوبہ اس پختہ یقین پر مبنی ہے کہ جن کے پاس ہنر ہے انہیں معاونت فراہم کی جائے تاکہ ان کی صلاحیتوں سے بلاامتیاز استفادہ کیا جا سکے۔

این آئی سی لاہور نے سب کی شمولیت کو یقینی بنانے کے لئے ان اہل نوجوانوں کا خیر مقدم کیا اور انہیں ایسا ماحول فراہم کیا گیا کہ ان کی پیداواری صلاحیت کو زیادہ سے زیادہ بروئے کار لایا جا سکے۔

اس موقع پر سید ذوالفقار بخاری نے اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ پروگرام میں شامل کاروباری نوجوانوں کی جانب سے دیئے گئے نتائج باعث مسرت ہیں اور یہ انہیں مناسب رہنمائی اور مواقع کی فراہمی سے ممکن ہوا ہے۔ انہوں نے امید ظاہر کی کہ برٹش ایشین ٹرسٹ، سٹی فاؤنڈیشن اور این آئی سی لاہور پاکستانی نوجوانوں میں سرمایہ کاری جاری رکھیں گے تاکہ وہ اپنی صلاحیت کو بروئے کار لا سکیں۔

سٹی بنک این اے کے مارکیٹنگ اور پبلک افیئرز کے سربراہ عدیل شاہد نے کہا کہ پاکستان میں آمدنی کے بڑھتے ہوئے فرق سے ملک کے محروم نوجوانوں کو مساوی مواقع میسر نہیں آتے۔ نوجوانوں کو رہنمائی اور رسائی کے مواقع فراہم کرنے سے انہیں اپنی مرضی کے شعبہ زندگی میں آگے بڑھنے کی شروعات کرنے میں مدد ملتی ہے۔ پاکستان ہر سال کام کرنے کی عمر تک پہنچنے والے نوجوانوں کے ساتھ 1.7 ملین ورک فورس کا حامل ملک ہے، 2020ء تک بیروزگاری کے شکار افراد کی تعداد 8.6 ملین تک بڑھنے کا امکان ہے جس سے پاکستانی نوجوانوں کو روزگار کے دائرہ سے باہر رہنے، آمدنی میں عدم مساوات، کم امکانات جیسے خطرات پاکستان کی پیداواری اور معاشی صلاحیت کے لئے سنگین چیلنج ثابت ہو سکتے ہیں۔

سٹی فاؤنڈیشن قابل اعتماد شراکت داروں بشمول برٹش ایشین ٹرسٹ اور این آئی سی لاہور کے ساتھ کام کرنے کی خواہاں ہے۔ ہم سب کی دلچسپی شہری نوجوانوں کو بااختیار بنانے میں ہے تاکہ ان کا مستقبل روشن ہو۔

مزید : کامرس