قتل کے مقدمہ سے دہشت گردی کی دفعات ختم کرنے کیخلاف درخواست پرمتعلقہ عدالت سے رپورٹ طلب

قتل کے مقدمہ سے دہشت گردی کی دفعات ختم کرنے کیخلاف درخواست پرمتعلقہ عدالت سے ...

لاہور(نامہ نگار خصوصی)لاہور ہائی کورٹ کے جسٹس سرداراحمد نعیم کی سربراہی میں قائم ڈویژن بنچ نے فیصل آباد میں 6 سالہ بچی کو بداخلاقی کے بعدقتل کرنے کے مقدمہ سے دہشت گردی کی دفعات ختم کرنے کے خلاف دائر درخواست پر سرکار اورمتعلقہ عدالت سے رپورٹ طلب کر لی ہے۔یہ درخواست بچی کے چچا کی طرف سے دائر کی گئی ہے جس میں موقف اختیار کیا گیاہے کہ فیصل آباد میں تھانہ سمن آباد کی حدود میں جولائی 2018 ء میں عبدالرزاق نے 6 سالہ بچی کو درندگی کا نشانہ بنا کر قتل کر دیا،ملزم کے خلاف درج مقدمے میں دہشت گردی کی دفعات شامل کی گئیں پھر فیصل آباد میں انسداد دہشت گردی کی عدالت نے غیر قانونی طور پر انسداد دہشت گردی کی دفعات ختم کرنے کے احکامات جاری کر دئیے ،درخواست میں کہا گیا ہے کہ ملزم کے گھناؤنے عمل سے علاقہ میں خوف و ہراس اور دہشت پھیلی اور ملزم عبدالرزاق اقبال جرم کر چکا ہے، درخواست گزار کے وکیل نے استدعا کی کہ مقدمہ سے دہشت گردی کی دفعات شامل کرنے کا حکم دیا جائے۔اس کیس پر مزید سماعت 28 نومبر کو ہو گی۔

رپورٹ طلب

مزید : صفحہ آخر