سپریم کورٹ کا پانی کی کمپنیوں سے فی لٹر ایک روپیہ ٹیکس لینے کا حکم

سپریم کورٹ کا پانی کی کمپنیوں سے فی لٹر ایک روپیہ ٹیکس لینے کا حکم

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر ) سپریم کورٹ نے بوتل بند مشروبات بنانے والی کمپنیوں کیخلاف کارروائی کا فیصلہ کر لیا ۔ چیف جسٹس نے اپنے ریمارکس میں کہا کہ کمپنیوں کیخلاف سول اور فوجداری قوانین کے تحت کارروائی کی جائے،کمپنیاں بغیر ادائیگی زیر زمین پانی نکال رہی ہیں،کمپنی مالکان کے خلاف بھی کارروائی کی جائے، اس پانی کو کسی نے منرل واٹر کہا تو ناراض ہوجاؤں گا۔ اسے منرل نہیں بوتل میں بند پانی کہنا چاہئے،بوتلوں کے پانی کو بند کردیں ہم گھڑے کا پانی پی لیں گے۔ منگل کو سپریم کورٹ میں منرل واٹر کمپنیوں کے پانی استعمال اور قیمت تعین کیس کی سماعت ہوئی۔ ایڈیشنل اٹارنی جنرل نے بتایا کہ منرل وا ٹرکمپنیاں ایک لیٹر پانی پر ایک روپیہ ٹیکس دینے کو تیار ہیں۔ چیف جسٹس نے کہا کہ اس پانی کو کسی نے منرل واٹر کہا تو ناراض ہوجاؤں گا۔ اسے منرل نہیں بوتل میں بند پانی کہنا چاہئے۔ جتنا زیر زمین پانی استعمال کیا جاچکا ہے اس پر بھی ٹیکس لیں۔ چیف جسٹس نے کہا اربوں روپے کا پانی نکال لیا گیا لوٹ مار کا حساب کون دے گا۔ نمائندہ منرل واٹر کمپنی نے بتایا کہ پانی کی پیمائش کا یونٹ کیا ہوگا۔ ایک روپیہ فی لیٹر کے حساب سے ایک کیوسک پر 42 ملین روپے دینا پڑیں گے۔ چیف جسٹس نے منرل وا ٹر کمپنی کے نمائندہ سے مکالمہ کیا کہ آپ اپنی انڈسٹری بند کردیں ایک صنعت کے فائدے کے لئے قوم کا نقصان نہیں کرسکتے۔ چیف جسٹس نے استفسار کیا کہ آپ اپنے کاروبار کے لئے خام مال مفت کیوں لے رہے ہیں۔ آپ کے منافع کے لئے قوم کو پیاسا نہیں مرنے دوں گا بوتلوں کے پانی کو بند کردیں ہم گھڑے کا پانی پی لیں گے۔ چیف جسٹس نے نمائندہ منرل واٹر کمپنی سے مکالمہ کیا کہ آپ اس قوم کے مسیحا نہیں آپ قوم کی فکر چھوڑیں اپنے منافع کی فکر کریں۔ تیس سال سے فیکٹری چلا رہے ہیں تیس سال میں قوم کا کتنا پانی استعمال کرگئے؟ چار بار آپ کی منرل واٹر میں ملاوٹ پکڑی۔ چیف جسٹس نے مکالمہ کیا کہ آپ کے وکیل میرے پاس سفارش لے کر آتے رہے آبی ماہر احسن صدیقی نے عدالت کو بتایا کہ پانی فروخت کرنے والی کمپنیاں زیر زمین پانی خشک کررہی ہیں۔ ان کمپنیوں کے پاس پانی کی کوالٹی چیک کرنے کے آلات ہی نہیں۔ ڈی جی ماحولیات نے بتایا کہ کمپنیوں نے کسی ماحولیاتی کمپنی سے سرٹیفکیٹ نہیں لیا۔چیف جسٹس نے کہا کہ مجھے بتائیں بوتلوں والا پانی کیسے تیار کیا جاتا ہے بوتل میں بند پانی کی کوالٹی کیا ہے؟ آبی ماہر نے بتایا کہ دریائے سندھ کے پانی سے بکٹیریا ختم کردیں تو بوتل والے سے ہزار گنا بہتر ہے۔ چیف جسٹس نے کہا کہ بوتل بند پانی والی کمپنیوں نے پانی چوری کیا ہے ۔ سپریم کورٹ نے بوتل بند مشروبات بنانے والی کمپنیوں کے خلاف کارروائی کا فیصلہ کرلیا۔ سپریم کورٹ نے کہا کہ کمپنیوں کے خلاف سول اور فوجداری قوانین کے تحت کارروائی کی جائے۔ کمپنیاں بغیر ادائیگی زیر زمین پانی نکال رہی ہیں۔ کمپنی مالکان کے خلاف بھی کارروائی کی جائے۔ عدالت نے آبی ماہر ڈاکٹر احسن صدیقی‘ ڈی جی ماحولیات کو تمام فیکٹریوں کا پانی چیک کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے پانی کی کوالٹی سے متعلق دس روز میں رپورٹ پیش کرنے کا حکم دے دیا۔

چیف جسٹس

مزید : صفحہ اول