ہماری حکومت میں سی ڈی اے نے وزیر اعظم کو بھی نوٹس بھیجا : شہریار آفریدی

ہماری حکومت میں سی ڈی اے نے وزیر اعظم کو بھی نوٹس بھیجا : شہریار آفریدی

اسلام آباد(آئی این پی)وزیرمملکت برائے داخلہ شہریار آفرید ی نے کہا ہے کہ وزیراعظم نے 6مہینے کے اندراسلام آباد کا نیا ماسٹر پلان بنانے کی ہدایت کردی ہے، اسلام آباد کے 2مواضع میں33ہزار کنال اراضی واگزار کرائی گئی ہے، قبضہ مافیہ کا تعلق جس بھی سیاسی جماعت سے ہو ان کیخلاف بلاامتیاز کاروائی کی جارہی ہے،ہماری حکومت میں سی ڈی اے نے وزیراعظم کو بھی نوٹس بھیجا ہے ،خیبرپختونخوا کے لاپتہ ایس پی طاہر داوڑ کا معاملہ حساس ہے اس پر ابھی کوئی بات نہیں کرسکتا، حکومت کو وقت دیں ، عوام کے سامنے سب اقدامات کرکے دکھائیں گے جبکہ معاون خصوصی سی ڈی اے علی نواز نے کہا کہ و فاقی دارالحکومت مسائل کا گڑھ بن چکا ہے، پینے کے صاف پانی کی فراہمی اسلام آباد میں سب سے بڑا مسئلہ ہے۔ 6ماہ میں تبدیلی سب کو نظر آئے گی۔وہ منگل کو یہاں میڈیاکوبریفنگ دے رہے تھے۔ انہوں نے کہا کہ اسلام آباد کا ماسٹر پلان 58سال بعد بھی نہیں بن سکا۔ ماسٹر پلان نہ بننے کی وجہ سے وفاقی دارالحکومت مسائل کا گڑھ بن چکا ہے۔ ماحولیات کے حوالے سے ماسٹر پلان نہ بننے کی وجہ سے متعلقہ محکمہ کارکردگی نہ دکھا سکا۔شہریار آفریدی نے کہا کہ اسلام آبادمیں 20لاکھ سے زیادہ آبادی بڑھ گئی ہے اور ساتھ ہی ساتھ نئے مسائل بڑھ رہے ہیں۔ وزیر مملکت برائے داخلہ نے کہا ہے ۔ وزیراعظم نے خود کو پیش کرکے منی ٹریل دیا۔ حکومت کو وقت دیں ۔ عوام کے سامنے سب اقدامات کرکے دکھائیں گے۔ قبضہ مافیہ کا تعلق جس بھی سیاسی جماعت سے ہو ان کیخلاف بلاامتیاز کاروائی کی جارہی ہے۔ ہماری حکومت میں سی ڈی اے نے وزیراعظم کو بھی نوٹس بھیجا ہے۔ ایس پی طاہر داود کا معاملہ حساس ہے اس پر ابھی کوئی بات نہیں کرسکتا ۔ ہم باتوں کے بجائے کام کررہے ہیں۔

شہر یار

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر