راولپنڈی اور گردونواح میں ملاوٹ مافیا کے خلاف گرینڈ آپریشن

راولپنڈی اور گردونواح میں ملاوٹ مافیا کے خلاف گرینڈ آپریشن

راولپنڈی (سٹی رپورٹر)ڈائریکٹر جنرل پنجاب فوڈ اتھارٹی کیپٹن (ر) محمد عثمان کی سر براہی میں راولپنڈی اور گردونواح میں ملاوٹ مافیا کے خلاف گرینڈ آپریشن کیا گیا۔ ناقص آئل،زائدالمعیاد اشیاء کی فروخت اور صفائی کے غیر معیاری انتظامات پر آئل ڈیلر،2فش پوائنٹس اور گودام کو سیل کر دیا گیا۔ تفصیلات کے مطابق زائد المعیاد اشیاء کی دوبارہ پیکنگ کا مکروہ دھندہ کر نیوالے آخر کار پنجاب فوڈ اتھارٹی کی پکڑ میںآگئے۔ڈی جی فوڈ اتھارٹی کی سربراہی میں ملاوٹ مافیا کے خلاف گرینڈ آپریشن کیا گیا۔فوڈ سیفٹی ٹیموں نے ویجیلنس سیل کی اطلاع پر مری روڈ پر واقع بے نامی گودام سے بھاری مقدار میں زائد المعیاد اشیائے خورونوش برآمدکر لیں۔برآمد شدہ ایکسپائر فلیورز اور سنیکس کی مدت استعمال بدل کر مارکیٹ میں دوبارہ فروخت کیلئے سپلائی کیا جا ناتھا۔کارروائی کے دوران 39 لاکھ 60 ہزار کولا فلیور ساشے، 23328 پیکٹس زائدالمعیاد سنیکس پیکٹ برآمد کیے گئے۔ کیپٹن (ر)محمد عثمان کے مطابق ویجیلنس سیل نے سپلائی چین کی ریکی کر کے کمپنی کا سراغ لگایا۔راول ٹاؤن میں واقع عابد آئل ڈیلر کو سابقہ دی گئی ہدایات پر عمل نہ کر نے ،استعمال شدہ آئل کی تلفی کے ریکارڈ کی عدم دستیابی اور سٹوریج کے ناقص انتظامات پرسر بمہر کر دیا گیا۔علاوہ ازیں مچھلی مارکیٹ کی دوبارہ چیکنگ کے دوران باسی مچھلی،ناقص آئل کے استعمال ، گندے اور بد بودار ماحول کی بناء پر معروف ماما جی فش اور سائیں جی فش پوائنٹس کو سیل کیا گیا۔مزید برآں 2فش پوائنٹس اور بیکری کو حفظان صحت کے اصولوں کی خلاف ورزیوں پر جر مانے عائد کیے گئے۔ڈی جی فوڈ اتھارٹی کا کہنا تھا کہ استعمال شدہ آئل تلف نہ کیا جائے تو صاف کر کے دوبارہ پیک بھی کیا جا سکتا ہے جو متعدد بیماریوں کا باعث بنتا ہے۔ کیپٹن (ر)محمد عثمان نے واضح کیا کہ پنجاب فوڈ اتھارٹی قوانین کی بار بار خلاف ورزی کرنیوالے یونٹس کا لائسنس منسوخ کرنے پر غور کر رہے ہیں۔انہوں نے مزید بات کرتے ہوئے کہا کہ وارننگ نوٹس، جرمانے اور سیل ہونے کے بعد بھی درست نہ ہونا قانونی طور پر ناقابل قبول عمل ہے۔ ملاوٹ مافیا کے خاتمے کے لیے اچانک کارروائیوں کے ساتھ سزاؤں میں بھی مزید سختی لائیں گے۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر