مخلوط اورمفروضوں پرمبنی سوالوں کوحصہ نہیں بنایاجاسکتا،نوازشریف کے وکیل نے عدالت کی جانب سے سوالات پر اعتراض اٹھا دیا

مخلوط اورمفروضوں پرمبنی سوالوں کوحصہ نہیں بنایاجاسکتا،نوازشریف کے وکیل نے ...
مخلوط اورمفروضوں پرمبنی سوالوں کوحصہ نہیں بنایاجاسکتا،نوازشریف کے وکیل نے عدالت کی جانب سے سوالات پر اعتراض اٹھا دیا

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن) سابق وزیراعظم نواز شریف نے العزیزیہ ریفرنس میں بطور ملزم اپنا بیان قلمبند کرانا شروع کردیاہے، احتساب عدالت کے جج ارشد ملک العزیزیہ ریفرنس کی سماعت کررہے ہیں۔

سماعت شروع ہوئی تو سابق وزیراعظم نواز شریف کو روسٹرم پر بلایا گیا جہاں آنے کے بعد انہوں نے 342 کا بیان قلم بند کرانا شروع کیا۔عدالت نے استفسار کیا کہ آپ نے استغاثہ کے شواہدکودیکھ،سن اورسمجھ لیا؟اس پر نوازشریف نے جواب دیتے ہوئے کہا کہ جی ہاںمیں نے سارے شواہددیکھ لیے ہیں۔

بیان سے پہلے نوازشریف کے وکیل کی چندسوالوں پر اعتراض اٹھا دیا ،وکیل زبیر خالدایڈووکیٹ کا کہناتھا کہ مخلوط اورمفروضوں پرمبنی سوالوں کوحصہ نہیں بنایاجاسکتا،تین تین سوالوں کوملاکرایک سوال بنایاگیا،جج ارشد ملک نے کہا کہ کوئی مسئلہ نہیں،ایک ایک کرتے تو 200 سوال بن جاتے۔

مزید : قومی /علاقائی /اسلام آباد