پمز ہسپتال انتظامیہ نے اپنی ناکامیاں چھپانے کے لئے مریضوں اور ان کے لواحقین پر ایسی پابندی عائد کر دی کہ آپ بھی حیران رہ جائیں گے

پمز ہسپتال انتظامیہ نے اپنی ناکامیاں چھپانے کے لئے مریضوں اور ان کے لواحقین ...
پمز ہسپتال انتظامیہ نے اپنی ناکامیاں چھپانے کے لئے مریضوں اور ان کے لواحقین پر ایسی پابندی عائد کر دی کہ آپ بھی حیران رہ جائیں گے

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)وفاقی دارالحکومت اسلام آباد کے سب سے اہم اور بڑے ہسپتال پاکستان انسٹیٹیوٹ آف مینجمنٹ سائنسز (پمز) کی انتظامیہ نے اپنی کوتاہیوں اور غلطیوں کو ٹھیک کرنے کی بجائے انہیں چھپانے کے لئے ہسپتال کے اندر موبائل فون کے استعمال پر پابندی عائد کردی ہے۔

نجی ٹی وی کے مطابق  اسلام آباد  کے پمز ہسپتال کی انتظامیہ نے جاری اعلامیے میں کہا ہے کہ ہسپتال میں داخل مریضوں اور ان کے لواحقین کو موبائل فون استعمال کرنے کی اجازت نہیں ہوگی اور ہسپتال کے اندرونی حصے میں کوئی شخص بھی کسی قسم کی آڈیو اور ویڈیو ریکاڈرنگ نہیں کرسکتا، خلاف ورزی پر قانونی کارروائی کی جائے گی اور متعلقہ افراد کو پولیس کے حوالے کردیا جائے گا۔واضح رہے کہ گزشتہ روز پمز ہسپتال میں اُس وقت ایک مریض زندگی کی بازی ہار گیا جب ہسپتال میں موجود سٹی سکین کی مشین بروقت درست نہ کرانے کے باعث جل گئی تھی۔یہی وجہ ہے کہ ہسپتال آنے والے افراد انتظامیہ کی بدانتظامی اور سہولتوں  کے فقدان کو منظرعام پر لانے کے لیے موبائل فون سے ویڈیوز بناتے اورسوشل میڈیا پروائرل کردیتے ہیں،اب پمز انتظامیہ نے توڑ کرتے ہوئے مریضوں اور ان کے لواحقین کے لئے ہسپتال کے اندر موبائل فون استعمال کرنے پر پابندی عائد کرنے کا نوٹیفکیشن جاری کر کے ہسپتال میں موجود سیکیورٹی عملے کو اس پابندی پر سختی سے عملدرآمد کرانے کی ہدایات کر دیں ہیں ۔ یاد رہے کہ اس سے پہلے لاہور کے سرکاری ہسپتالوں میں بھی اس قسم کی پابندی عائد کی جا چکی ہے ۔

مزید : علاقائی /اسلام آباد