جندول، ضلع بھرمیں ٹماٹر کاراج دیگر سبز یاں بھی قوت خرید سے باہر ہوگئیں

جندول، ضلع بھرمیں ٹماٹر کاراج دیگر سبز یاں بھی قوت خرید سے باہر ہوگئیں

  



جندول(نمائندہ پاکستان) ضلع بھر میں ٹماٹر کا راج دیگر سبزیاں بھی قوت خرید سے باہر ہو گئیں، غریب کیا صاحب حیثیت لوگ بھی مہنگائی کے طوفان کے سامنے بے بس۔ مقامی سبزیوں کی قیمتیں بھی آسمان سے باتیں کرنے لگی۔تفصیلات کے مطابق اس ماہ کے شروع ہوتے ہی دیگر اجناس کے بعد سبزیوں کی قیمتوں میں ریکارڈ اضافہ ہوا ہے۔ٹماٹر جو پہلے بیس روپے فی کلو میں ملتے تھے اب ایک سو پچاس سے کم نہیں ملتے، آلو فی کلو قیمت بیس روپے سے بڑھ کر چالیس پیاز چالیس سے بڑھ کر سو، بنڈی بیس سے ایک سو بیس اور دیگر سبزیوں کی قیمتیں بھی آسمان سے باتیں کرتی ہیں۔میڈیاں سے گفتگو کرتے ہوئے علاقہ کے مذدور کار افراد بحرام خان، دلاور خان، شامراد، سلطان خان و دیگر کا کہنا تھا کہ فی دن انہیں پانچ سو سے لیکر سات سو روپے تک دہاڑی ملتی ہے اور مہنگائی کی وجہ سے تعمیراتی کام بھی ٹھپ پڑے ہیں اس لئے مہینہ کے پندرہ دن وہ بے روزگار ہوتے رہتے ہیں اس لئے گھروں کا بوجھ اٹھانا ان کے بس سے باہر ہو گیا ہے۔مذدوروں کے مطابق بیماریوں اور دیگر ضروریات کی وجہ سے وہ لوگ کافی مقروض ہو چکے ہیں اور اس کے علاوہ خوراک کی کمی کی وجہ سے ان کی اپنی اور بچوں کی صحت بھی کافی کمزور ہو چکے ہیں۔ علاقہ کے متوسط لوگوں کے مطابق ملک میں سبزیوں سمیت دیگر اجناس،خوراکی مواد، تعمیراتی مواد، پٹرولیم مصنوعات اور دیگر تمامم چیزوں کی کی قیمتیں بڑھ گئیں ہیں جس کی وجہ سے ہر طبقہ کے لوگ متاثر ہیں اور غریب متوسط اور مالدار طبقہ کے لوگ یکساں متاثر ہیں۔ مقامی لوگوں کے مطابق مہنگائی کا یہ طوفان اگر جاری رہاں تو عوام خود کو بچھانے کیلئے غیر قانونی طریقہ سے دولت اکھٹا کر کے ضروریات پوری کرنے کا سلسلہ شروع کر دینگے جس کی وجہ سے بد امنی کا سلسلہ شروع ہوگا جسے روکھنا حکومت کے بس سے باہر ہو جائے گا۔مقامی لوگوں کے مطابق یوٹیلٹی سٹور ز میں بھی اکثر اشیاء کی قیمتیں بازار کی قیمتوں سے زیادہ ہوتے ہیں اور جن اشیاء کی قیمتیں مستحکم ہوں وہ یوٹیلٹی سٹورز میں دستیاب ہی نہیں ہوتے۔مقامی لوگوں نے حکومت سے مہنگائی کے طوفان کو بریک لگانے کا مطالبہ کیا۔

مزید : پشاورصفحہ آخر