جندول، تاجروں کا چوری کی وارداتوں میں اضافہ کیخلاف احتجاج

جندول، تاجروں کا چوری کی وارداتوں میں اضافہ کیخلاف احتجاج

  



جندول(نمائندہ پاکستان) تحصیل ثمرباغ میں چوریوں کے مسلسل وارداتوں کے خلاف تنظیم تاجران کا شدید احتجاج، پولیس چوروں کو پکڑ نہیں سکتے تو بوریاں بستر گول کر دیں، تنطیم تاجران نے شٹر ڈاون احتجاج کیلئے لائحہ عمل کا اعلان کر دیا۔ تفصیلات کے مطابق ممتاز تاجر سماجی کارکن اور سابق نائب ناظم ثمرباغ سلیم خان کی سربراہی میں تنظیم تاجران کا اجلاس بازار ثمرباغ میں منعقد ہوا اجلاس میں تاجروں نے کثیر تعداد میں شرکت کی۔ اجلاس کے شرکاء سے دوست الرحمن، سلیم خان اور حاجی حیات اللہ نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ گذشتہ ایک ماہ کے دوران ثمرباغ بازار میں بیس سے زیادہ چوری کے وارداتوں میں پچاس لاکھ روپے سے زیادہ کا مال لوٹ لیا گیا، مشران نے کہا کہ بنگلہ مارکیٹ میں رحیم اللہ کے دکان سے پینتالیس بیٹریاں تیس سولر شیشے، عارف خان سٹیڈئم کے قریب دکان سے ایک لاکھ روپے کا گندم،راحت فوڈ گرین سے دو مرتبہ تقریباََپانچ لاکھ کا سودا،گل شریف کاسمیٹکس سے ایک لاکھ کا سودا،اعزاز الد طوطی رحمن سے سوزوکی پک اپ،نور محمد ساکن نوکوٹو سے بھی سوزوکی پک اپ،شاہ ولی بنگلہ مارکیٹ کے گودام سے پچاس تروڑہ قیمتی سیلہ چاول،حبیب کلاۃ کے دکان سے آٹھ لاکھ کا کپڑا،عطاء اللہ پولٹری ڈیلر کا موٹر سایکل،عطاء اللہ آراہ مشین سے تین لاکھ کا چینسہ مشین،افتخار سینٹری سے ایک لاکھ کا سودا،طارق جان کولڈرنکس سے پچاس ہزار روپے،وقاص پکی پکائی دیگ مرچنٹ سے اسی ہزار نقدی،باچا کولڈرنکس کے دکان سے پچاس ہزار نقدی۔ان کے علاوہ بازار کامبٹ اور بازار صدبرکلی میں بھی کئی دکانات لوٹے گئیں، تاجر تنظیموں کے مشران نے کہا کہ اگر پولیس چوروں کو نہیں پکڑ سکتے تو بوریاں بستر گول کر کے سیکیورٹی کی ذمہ داری عوام کے سپرد کر دیں تاکہ عوام خود پہرہ دیں اور باقی لوگ چین کی نیند سو سکیں۔مشران نے پولیس کو دو ہفتوں کا الٹی میٹم دیتے ہوئے کہا کہ اگر دو ہفتوں کے اندر اندر چوروں کو پکڑ کر مال برآمد نہ کیا گیا تو تھانہ ثمرباغ کا گھیراوں کرینگے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر