جرمن سفیر کی جماعت اسلامی کے وفد سے ملاقات، مختلف امور پر تبادلہ خیال

جرمن سفیر کی جماعت اسلامی کے وفد سے ملاقات، مختلف امور پر تبادلہ خیال

  



لاہور(نمائندہ خصوصی) جرمن سفیر برن ہارڈ سٹیفن شلیگ ہیگ نے منصورہ میں جماعت اسلامی کی اعلیٰ قیادت سے ملاقات کی۔ ملاقات میں سیکرٹری جنرل جماعت اسلامی امیر العظیم، نائب امراء لیاقت بلوچ، ڈاکٹر فرید احمد پراچہ، ڈائریکٹر امور خارجہ عبدالغفار عزیز، ڈپٹی سیکرٹری جنرل محمد اصغر شامل تھے۔ قریباً ایک گھنٹہ جاری رہنے والی ملاقات میں عالمی، علاقائی اور خصوصاً کشمیر کی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا گیا۔اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے لیاقت بلوچ نے کہاکہ مقبوضہ کشمیر میں بے گناہ کشمیریوں پر ڈھائے جانے والے مظالم کو ختم کیے بغیر خطے میں امن قائم نہیں ہوسکتا۔ عالمی برادری اور حقوق انسانی کی عالمی تنظیموں کو کشمیر میں جاری کرفیو کے خاتمہ کے لیے اپنا کردار ادا کرنا چاہیے۔ جرمن سفیر نے کہاکہ ہماری حکومت کی بھی کشمیر کے حالات پر گہری نظر ہے۔ ہم کشمیر کا پرامن حل چاہتے ہیں۔ دریں اثنا لیاقت بلوچ نے طلبہ، نوجوانوں اور اقلیتوں کے وفد سے گفتگو اور سوالوں کے جواب دیتے ہوئے کہاکہ میاں نوازشریف کی صحت پرنااہل حکومت نے سیاسی دھندا کیا، خود ہی الجھاؤ کا شکار ہوگئی ہے۔ میری رائے ہے کہ میاں نوازشریف کو علاج کے لیے باہر جانے سے انکار کردینا چاہیے، زندگی موت حکومتوں کا نہیں اللہ تعالیٰ کا اختیار ہے۔ پاکستان میں اقلیتوں کے حقوق محفوظ ہیں۔ جماعت اسلامی محب وطن اقلیتوں کو پاکستان کے بااعتماد شہری تسلیم کرتی ہے۔ ہندوستان میں بابری مسجد مقدمہ کے فیصلہ نے ثابت کردیا ہے کہ وہاں مسلمان دوسرے درجے کے شہری ہیں۔جموں و کشمیر میں کشمیریوں پر مظالم سے عیاں ہے کہ نریند ر مودی بھارت کے سیکولر چہرے کو بے نقاب کررہاہے، انسانی حقوق کی انہیں کوئی پروا ہ نہیں۔

جماعت اسلامی ملاقات

مزید : صفحہ آخر