ترسیلات زر میں 2فیصد کمی ، درآمد کنند گان کیلئے ڈالر کی ایڈوانس ادائیگی پر پابندی ختم : سٹیٹ بینک

ترسیلات زر میں 2فیصد کمی ، درآمد کنند گان کیلئے ڈالر کی ایڈوانس ادائیگی پر ...

  



کراچی(آن لائن )بیرون ملک مقیم پاکستانیوں کی جانب سے بھیجی جانے والی ترسیلات زر میں رواں مالی سال کے پہلے 4 ماہ میں کم از کم 2 فیصد کی کمی ریکارڈ کی گئی۔سٹیٹ بینک کی ایک رپورٹ کے مطابق مالی سال 2020 کے ماہ جولائی تا اکتوبر کے دوران ترسیلات زر کی مد میں 7 ارب 47 کروڑ 80 لاکھ ڈالر موصول ہوئے جو گزشتہ سال میں اسی عرصے کے 7 ارب 61 کروڑ 70 لاکھ لاکھ ڈالر کے مقابلے میں 1.8 فیصد کم تھی۔اسٹیٹ بینک کی جانب سے جاری کیے گئے اعداد و شمار کے مطابق سعودی عرب سے ترسیلات زر کا حجم سب سے زیادہ رہا ہے لیکن رواں مالی سال کے 4 ماہ میں یہ 1.1 فیصد کم ہو کر ایک ارب 73 کروڑ 70 لاکھ ڈالر رہا جبکہ مالی سال 19-2018 کے اسی عرصے میں یہ ایک ارب 75 کروڑ 70 لاکھ ڈالر تھا۔علاوہ ازیں رپورٹ میں بتایا گیا کہ امریکا سے ترسیلات زر میں 3.8 فیصد اضافہ اور یہ ایک ارب 18 کروڑ 80 لاکھ ڈالر سے بڑھ کر ایک ارب 23 کروڑ 40 لاکھ ڈالر تک پہنچ گئی،اسٹیٹ بینک کے مطابق مالی سال 2019 کے 4 ماہ میں ترسیلات زر میں سالانہ بنیاد پر 34.8 اضافہ دیکھا گیا۔دوسری جانب ترسیلات زر کے حوالے سے برطانیہ تیسرے نمبر رہا اور جولائی سے اکتوبر کے دوران ایک ارب 14 کروڑ 30 لاکھ ڈالر موصول ہوئے جو گزشتہ مالی سال کے اسی عرصے کے مقابلے میں 0.94 زائد ہیں۔مرکزی بینک کے مطابق متحدہ عرب امارات سے موصول ہونے والی ترسیلات زر میں 6.6 فیصد کمی ریکارڈ کی گئی۔رپورٹ کے مطابق رواں مالی سال کے جولائی اور اکتوبر کے درمیان یو اے ای سے ایک ارب 53 کروڑ 80 لاکھ ڈالر موصول ہوئے جبکہ گزشتہ مالی سال کے اسی عرصے میں ترسیلات زر کا حجم ایک ارب 64 کروڑ 60 لاکھ ڈالر ریکارڈ کیا گیا تھا۔اعداد و شمار کے مطابق خلیجی ممالک سے بھی ترسیلات زر موصول ہونے میں 2.3 فیصد کمی ریکارڈ کی گئی۔اسٹیٹ بینک کے مطابق خلیجی تعاون کونسل کے ممالک سے بھی ترسیلات زر میں 2.3 فیصد کمی ہوئی اور یہ 71 کروڑ 10 لاکھ ڈالر رہی جو گزشتہ سال کے اسی عرصے میں 72 کروڑ 70 لاکھ ڈالر تھی۔مرکزی بینک نے بتایا کہ یورپی یونین سے ترسیلات زر میں 3.3 فیصد اضافہ ہو کر یہ 23 کروڑ ڈالر ریکارڈ کی گئی جبکہ ملائیشیا سے آنے والی ترسیلات زر میں نمایاں کمی دیکھی کی گئی اور یہ صرف 54 کروڑ 20 لاکھ ڈالر رہی۔

سٹیٹ بنک

کراچی (این این آئی) اسٹیٹ بینک آف پاکستان کے گورنر ڈاکٹر رضا باقر نے پاکستان کیمیکلز اینڈ ڈائز مرچنٹس ایسوسی ایشن ( پی سی ڈی ایم اے) کی تجویز سے اتفاق کرتے ہوئے ڈالر کی ایڈوانس ادائیگی پر عائدپابندی ختم کردی ہے جس کے بعد درآمدکنندگان10ہزار ڈالر تک بینکوں سے ایڈوانس ادائیگی کراسکتے ہیں۔اسٹیٹ بینک کی جانب سے 2018میں ایڈوانس ادائیگی پر پابندی عائد کی گئی تھی۔گورنر اسٹیٹ بینک نے دو روز قبل پی سی ڈی ایم اے کے چیئرمین وسابق ڈائریکٹر پاکستان اسٹاک ایکسچینج امین یوسف بالاگام والا کی سربراہی میں ملنے والے وفد سے ملاقات میں کمرشل امپورٹرزکو ایل سی کھولنے یا بینک کنٹریکٹ کے لیے 10ہزار ڈالر ایڈوانس ادائیگی پر عائدپابندی ہٹانے سے درخواست پر غور کرنے کی یقین دہانی کروائی تھی۔

رضاباقر

مزید : صفحہ آخر