وہ خاتون جس نے 38 برس تک اپنا نابینا پن اپنے گھر والوں سے بھی چھپائے رکھا، انتہائی حیرت انگیز کہانی

وہ خاتون جس نے 38 برس تک اپنا نابینا پن اپنے گھر والوں سے بھی چھپائے رکھا، ...
وہ خاتون جس نے 38 برس تک اپنا نابینا پن اپنے گھر والوں سے بھی چھپائے رکھا، انتہائی حیرت انگیز کہانی

  



لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) کسی شخص کی بینائی چلی جائے تو کیا وہ اپنی اس معذوری کو لوگوں سے، حتیٰ کہ اپنے گھر والوں سے بھی چھپا سکتا ہے؟آپ کا جواب یقینا ’نہیں‘ میں ہو گا لیکن آپ کو یہ سن کر حیرت ہو گی کہ برطانیہ میں ایک خاتون گزشتہ 38سال سے اندھی ہے اور اس نے یہ بات نہ اپنے ماں باپ اور شوہر تک کو بھی پتہ نہیں چلنے دی۔ میل آن لائن کے مطابق زینا کوپر نامی یہ خاتون برطانوی شہر ایمنفرڈ کی رہائشی ہے اور اس وقت اس کی عمر 42سال ہے۔ وہ چار بچوں کی ماں ہے۔ اس نے ماسٹرز تک تعلیم پائی اور اب سکول قونصلر کی ملازمت کرتی ہے۔

زینا کوپر ’مارفین سنڈروم‘ نامی بیماری کے ساتھ پیدا ہوئی تھی جو مریض کی آنکھوں پر اثرانداز ہوتی اور اسے نابینا کر دیتی ہے۔زینا چار سال کی تھی جب اس کی بینائی کم ہونی شروع ہوئی اور اگلے کچھ عرصے میں وہ اندھی ہو گئی مگر اس نے اپنے ماں باپ کو بھی اس کی ہوا نہیں لگنے دی۔ اب زینا نے ایک کتاب لکھی ہے جس میں اس نے اپنی ناقابل یقین کہانی بیان کی ہے۔ اس کتاب کا نام ’What You See When You Can't See‘ ہے۔کتاب میں اس نے لکھا ہے کہ ”میں غیرمعمولی ذہانت کی حامل تھی چنانچہ جب میری بینائی چلی گئی تو یہی ذہانت میرے کام آئی۔ میں نے راستوں کو اپنے ذہن میں بٹھا لیا، کہ کون سی سڑک کہاں سے مڑتی ہے اور کس جگہ کون سی دکان یا عمارت ہے۔ اسی طرح گھر کے اندر بھی میں نے ہر چیز اپنے ذہن میں بٹھا لی اور اس مہارت کے ساتھ گھر کے کام بھی کرتی کہ کبھی میرے ماں باپ اور بعد میں شوہر کو شک بھی نہیں ہوا کہ میں اندھی ہو چکی ہوں۔ “

زینا نے لکھا ہے کہ ”عموماً لوگ ہم اندھے لوگوں کے متعلق سوچتے ہیں کہ ہمیں بالکل اندھیرا دکھائی دیتا ہے لیکن ایسا نہیں ہے۔ بینائی سے محروم 90فیصد سے زائد لوگ روشنی کا احساس رکھتے ہیں۔ ہمیں چیزوں کا احساس بھی عام لوگوں کی نسبت کئی گنا زیادہ ہوتا ہے۔ جب میرا کوئی بچہ بیمار ہوتا تھا تو اسے سونگھنے سے ہی مجھے پتا چل جاتا تھا۔ بیمار بچے کے جسم سے ایک تلخ سی بُو اٹھتی ہے جسے میں محسوس کر سکتی ہوں۔ “ جب زینا سے پوچھا گیا کہ اس نے یہ بات لوگوں سے چھپا کر کیوں رکھی؟ تو اس کا کہنا تھا کہ ”میں بہت شرمندگی محسوس کرتی تھی، میں سوچتی تھی کہ جب لوگوں کو پتا چلے گا تو وہ میرے ساتھ مختلف سلوک روا رکھنے لگیں گے اور مجھ پر ترس کھانے لگیں گے۔“

مزید : ڈیلی بائیٹس